جی سی یو: چار برس میں طلباء گروپ میں تصادم نہیں ہوا

جی سی یو: چار برس میں طلباء گروپ میں تصادم  نہیں ہوا

 گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور میں گزشتہ تقریبا چار برس میں کوئی سیاسی یا غیر سیاسی طلباء مظاہر ہ یاتصادم نہیںہوا، جبکہ تحریک انصاف کے لاہور بند احتجاج کے روز بھی جی سی یو میں امتحانات کا انعقاد ہواجس میں طلباء حاضری سو فیصد رہی۔ یہاں تک کہ جی سی یو سٹاف یا اساتذہ کی جانب سی بھی کوئی مظاہرہ یا ریلی کا انعقاد سامنے نہیں آیا۔جی سی یونیورسٹی میں طلباء کی تعداد 11557تک جا پہنچ چکی ہے۔ یونیورسٹی کے سیکورٹی ذرائع کے مطابق یونیورسٹی میںچار برس میں کوئی طلباء گروپ کے درمیان تصادم کا واقع بھی پیش نہیں آیا، جبکہ یہ حقیقت ہے کہ یونیورسٹی میں پٹھان اور بلوچ طلباء کی بڑی تعدادزیرِ تعلیم ہے اور ماضی میں یونیورسٹی کے نیوہوسٹل میں ان کے مابین لڑائیوںکے واقعات سامنے آئے تھے۔کوئی بھی سیاسی و غیر سیاسی طلباء تنظیم چار برس میں یونیورسٹی میں اپنی بیس بنانے میں کامیاب نہیں ہوئی۔ یہاں تک کے یونیورسٹی کی 150سالہ تقریبات میں8ہزار طلباء کی تقریب میں ایک بھی نعرے بازی کا واقع سامنے نہیں آیا۔یونیورسٹی کے اساتذہ کا کہنا ہے کہ پروفیسر ڈاکٹر محمد خلیق الرحمان کا بطور وائس چانسلر دوراب تک انتہائی پرامن اورنظم وضبط والا رہا ، جبکہ سابق انتطامیہ کے دور میں طلباء کے خلاف ڈسپلن خلاف ورزی پر دہشتگردی کے پرچہ بھی دئیے گئے تھے اور کئی طلباء کو یونیورسٹی سے نکالا بھی گیا تھا۔

پنجاب یونیورسٹی نے غالب عطا کو پی ایچ ڈی کی ڈگری جاری کر دی
پنجاب یونیورسٹی نے غالب عطا ولد عطا الرحمان کوایڈمنسٹریٹو سائنسز (مینجمنٹ) کے مضمون میں ان کے’’پاکستان میں اداراتی تبدیلی پر اثراندازہونے والے عوامل اور سی۔ای۔ او کا کردار (ادارے کے سربراہ کا کردار) ‘‘کے موضوع پر، پی ایچ ڈی مقالہ کی تکمیل کے بعد پی ایچ ڈی کی ڈگری جاری کر دی ہے۔