پاک آرمی کی طرف سے خصوصی تربیت

پاک آرمی کی طرف سے خصوصی تربیت

خیبر پختونخواہ کے مختلف علاقوں میں دہشتگردوں کے خلاف بر سرپیکار پاک آرمی نے جہاں دہشتگردوں کے ٹھکانوں کو تباہ کیا اور ہزاروں دہشتگردوں کو پابند سلاسل کیا وہاں انہوں نے تعمیراتی عمل کے ساتھ ساتھ ہزاروں پولیس اہلکاروں کی تربیت بھی مکمل کی وقتاً فوقتاً پاک آرمی کے آفیسرز اور جوانوں نے پولیس اہلکاروں کو دہشت گردوں سے نمٹنے کیلئے گر سکھائے  اور انہیں جسمانی طور پر مضبوط اور ذہنی طور پر الرٹ رہنے کے بھی تربیت دی لیکن حال ہی میں کائونٹر ٹیریریزم سینٹرکھاریاں میں ملاکنڈ ڈویژن کے سینکڑوں پولیس اہلکاروں کو تربیت دی گئی اس کو نہ صرف پولیس اہلکاروں نے بے حد سراہا بلکہ ملاکنڈ ڈویژن کے لوگوں نے بھی پاک آرمی کو خراج تحسین پیش کیا ہے اور یہ امید ظاہر کی ہے کہ تربیت یافتہ پولیس اہلکار اب علاقے میں دہشت گردوں کا نام و نشان مٹانے کیلئے پاک فوج کے جوانوں اور عوام کے شانہ بشانہ اپنے صلاحیتیں بروئے کار لائیں گے۔ کھاریا ں سنٹر میں ملاکنڈ ڈویژن کے ہر ضلع سے جن میں سوات، شانگلہ، بونیر، دیر لوئر، ملاکنڈ اور چترال شامل ہے سے تعلق رکھنے والے مز ید 184پولیس اہلکاروں کو تربیت دی گئی جس میں ہتھیاروں کے ساتھ ساتھ لڑ نے کے علاوہ بغیر ہتھیاروں کے دہشت گردوں کے ساتھ مقابلہ کر نے کے تر بیت بھی دی گئی اہلکاروں کو سب مشین گن، رائفل جی تھری، لائٹ مشین گن اور دستی بم کے استعمال میں کے بھی خصوصی مہارت حاصل فراہم کی گئی۔ تر بیت کے وقت معلوم ہو ا کہ تربیت یافتہ پولیس اہلکار اب کسی بھی مقام پر دہشت گردوں کا بھرپو ر صلا حیت کے ساتھ مقابلہ کر سکیں گے اور عوام کے تحفظ یقینی بنائیں گے۔
اس حوالے سے الیکٹرانک میڈیا کا ٹریننگ سنٹر کا دورہ کرایا اور وہاں پر انہیں ٹریننگ کے حوالے سے بر یفنگ دی، اس حوالے سے وہاں پر ایک پر وقار خصوصی تقریب منعقد کی گئی تھی جس میں GOC میجر جنرل جاوید محمود بخاری، ڈی آئی جی ملاکنڈ رینج عبد اللہ خان کے علاوہ اعلیٰ احکام اور میڈیا سے تعلق رکھنے والے کثیر تعداد میں صحافیوں نے بھی شر کت کی۔ اس مو قع پر جی او سی میجر جنرل جاوید محمود بخاری نے کہا کہ ملاکنڈ ڈویژن میں فوج کے علاوہ قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کی صلاحیت و استعداد کو بڑھانے کا کام پاک فوج کی نگرانی میں تسلسل کے ساتھ جاری ہے اس لئے یہ ادارے مستقبل قریب میں اپنی ذمہ داریاں بغیر فوج کی نگرانی بخوبی سرانجام دے سکیں گے۔ اب تک کائونٹر ٹیررزم سینٹر پبی میں پولیس کے تقریباََ1700 سے زائد جوانوں نے تربیت حاصل کی ہے  جبکہ اس سال سوات ، بونیر، شانگلہ اور دیگر اضلاع سے سے تعلق رکھنے والے 184 جوانون نے تربیت حاصل کی اور ہم کو شش کرینگے کہ مزید پولیس اہلکاروں کو بھی اسی قسم کے تر بیت فراہم کر سکیں۔ تقریب سے ڈی آئی جی ملاکنڈ ڈویژن رینج عبداللہ نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا اور کہا کہ ملاکنڈ ڈویژن کے تمام پولیس اہلکا ر پہلے سے ہی کافی صلاحیتوں  کے مالک رہے ہیں تاہم اس تربیت سے ان کے حوصلے مزید بلند ہونگے اور ہمیں یہ امید ہے کہ یہی تر بیت یافتہ اہلکار پورے ملاکنڈ ڈویژن میں اب دہشت گردوں کے دوبارہ اٹھانے کا نام و نشان تک مٹا دینگے۔ آخر میں مہمان خصوصی مہمان خصوصی میجر جنرل جاوید محمود بخاری نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے جوانوں میں انعامات تقسیم کئے۔ پاک آرمی کے اس قسم کے تعاون سے مستقبل میں پورے ملاکنڈ ڈویژن کے عوام نے سکھ کا سانس لیں سکیں نگے کیونکہ جب مقامی طور پر عوام اور علاقے کو پولیس کی ایک مضبو ط نیٹ ورک میسر آئیں تو علاقے میں خو شحالی اور تر قی کا دور دورہ ہوگا۔ہر شخص محفوظ ہو گا اور عوام کو خصوصاََ پولیس اہلکاروں پر اعتماد بڑھ جائیگا جو خصوصی طور پر ہمارے لئے بڑی خوشی کا با عث ہو گا۔