زرداری عام معافی دے کر نواز شریف، شہباز شریف کو اہل قرار دلا سکتے ہیں: آئینی ماہر

لندن(نمائندہ خصوصی) صدر آصف علی زرداری آئینی اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے میاں نواز شریف اور میاں شہباز شریف کی طیارہ سازش کیس اور کرپشن کیس میں عام معافی دے کر انہیں اہل قرار دے سکتے ہیں۔ آئینی ماہرین کے مطابق صدر آصف علی زرداری کے پاس آئین کے آرٹیکل 45 کے تحت ایسے اختیارات موجود ہیں جس سے وہ اس مسئلے کو ہمیشہ کے لئے ختم کر سکتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق آصف زرداری اگر اپنے بیانات کے مطابق مفاہمتی پالیسی اختیار کریں تو ملک بحران سے نکل سکتا ہے۔ آئینی ماہر ادریس اشرف ملک جوکہ سابق صدر پرویز مشرف کے بیرسٹر وسیم سجاد کے ساتھ کونسل رہ چکے ہیں کا کہنا ہے کہ نواز شریف پی سی او ججز کو تسلیم نہیں کرتے لیکن آصف علی زرداری کو آئینی صدر تسلیم کرتے ہیں لہٰذا عدالت میں دفاع کی بجائے صدر سے رجوع کیا جائے۔ آئینی ترمیم کے ذریعے بھی اس شق کو آئین سے نکالا جا سکتا ہے جو ایک مجرم کو ممبر پارلیمنٹ بننے سے روکتی ہے۔ آئینی ماہرین کے مطابق 1973ءکے اصل آئین میں کوئی ایسی شق موجود نہیں جس میں کسی شخص پر جرم ثابت ہونے سے اسے ممبر پارلیمنٹ بننے سے روکا جا سکے۔ نااہل کرنے کی شقیں یا تو 8 ویں ترمیم نے آئین کا حصہ بناتی ہیں یا پھر 17 ویں ترمیم میں شامل کی گئیں ہیں جو میاں نواز شریف کے خلاف جاتی ہیں۔