رانا ثنائ، عائشہ غوث نے حلف اٹھا لیا: عوامی تحریک کا گورنر ہاؤس کے باہر احتجاج

رانا ثنائ، عائشہ غوث نے حلف اٹھا لیا: عوامی تحریک کا گورنر ہاؤس کے باہر احتجاج

لاہور (خصوصی رپورٹر) رانا ثناء اللہ خان اور ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا نے گذشتہ روز گورنر ہاؤس میں پنجاب کے وزراء کا حلف اٹھا لیا۔ گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے حلف لیا۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف اور صوبائی کابینہ کے ارکان و سول حکام موجود تھے۔ رانا ثناء اللہ خان کو ایک مرتبہ پھر وزارت قانون اور بلدیات کا قلمدان سونپا گیا ہے جبکہ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا کو وزارت خزانہ دی گئی ہے۔ رانا ثناء کا شمار وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کے قابل اعتماد ساتھیوں میں ہوتا ہے۔ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا سابق وفاقی وزیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ پاشا کی اہلیہ ہیں۔ حلف اٹھانے کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف رانا ثناء اللہ سے گلے ملے اور انہیں مبارکباد دی۔ رانا ثناء نے وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا۔ حلف برداری کی تقریب کے موقع پر عوامی تحریک کے کارکن گورنر ہاؤس کے سامنے جمع ہو گئے اور احتجاج کیا۔ خرم نواز گنڈا پور ان کی قیادت کر رہے تھے۔ عوامی تحریک کے کارکنوں نے بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ رکھی تھیں۔ وہ پارٹی کے جھنڈے اور بینر اٹھائے ہوئے تھے جن پر حکومت مخالف نعرے درج تھے۔ مظاہرین نے چائنا چوک سے گورنر ہاؤس تک احتجاجی مارچ کیا اور نعرے لگاتے رہے۔ رانا ثناء اللہ خان نے 11 ماہ 9 روز تک وزارت سے الگ رہنے کے بعد دوبارہ حلف اٹھایا۔ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا نے پنجاب کی پہلی خاتون وزیر خزانہ ہونے کا اعزاز حاصل کر لیا۔ متوقع طور پر 10 جون کو پنجاب کیلئے آئندہ مالی سال کا بجٹ پیش کرکے بھی ایک منفرد اعزاز حاصل کر لیں گی۔ پنجاب کابینہ میں دو نئے وزراء کی شمولیت کے بعد کابینہ کے ممبران کی تعداد 22 ہو گئی ہے جن میں 21 وزیراور 1 وزیراعلی کے مشیر خواجہ سلمان رفیق ہیں۔ علاوہ ازیں عوامی تحریک گوجرانوالہ، نارووال کے زیر اہتمام پریس کلب کے باہر ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے جے آئی ٹی کی رپورٹ کے خلاف احتجاجی مظاہرے جاری رہے۔ گوجرانوالہ میں مظاہرے کی قیادت رحیق عباسی جبکہ نارووال میں سینئر نائب صدر خان عبدالقیوم خان ایڈووکیٹ نے کی۔ رحیق احمد عباسی نے کہا کہ 17 جون 2014ء کو ماڈل ٹؤن سے 14 معصوموں کے جنازے اٹھے، ایک سال بعد نام نہاد رپورٹ آنے کے بعد انصاف کا جنازہ اٹھ گیا اور اب انشاء اللہ جلد اس آمرانہ ظلم پر مبنی نظام کا جنازہ اٹھے گا۔ انہوں نے کہا کہ جب تک یہ قاتل حکمران مسلط ہیں ماڈل ٹاؤن اور ڈسکہ کے سانحات رونما ہوتے رہیں گے۔