میجر (ر) عامر کا طالبان کیساتھ مذاکراتی عمل سے علیحدگی کا اعلان‘ نظرثانی کریں وزارت داخلہ نے رابطہ کر لیا

میجر (ر) عامر کا طالبان کیساتھ مذاکراتی عمل سے علیحدگی کا اعلان‘ نظرثانی کریں وزارت داخلہ نے رابطہ کر لیا

اسلام آباد (محمد نواز رضا/ وقائع نگار خصوصی) باخبر ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت نے آئی ایس آئی کے سابق سینئر افسر میجر (ر) عامر کے طالبان سے مذاکراتی عمل سے علیحدگی کے فیصلے کا نوٹس لے لیا ہے۔ وفاقی وزارت داخلہ نے میجر (ر) عامر سے رابطہ قائم کیا ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ اپنے فیصلے پر نظرثانی کریں۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان کو الیکٹرانک میڈیا کے ذریعے میجر (ر) عامر کے فیصلے کا علم ہوا۔ میجر (ر) عامر آج یا کل وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان سے ملاقات کریں گے جس میں وہ انہیں مذاکراتی عمل سے علیحدگی کی وجوہات سے آگاہ کریں گے اور وفاقی وزیر داخلہ انہیں اپنے فیصلے پر نظرثانی کرنے پر آمادہ کریں گے۔ طالبان شوریٰ  سے مذاکرات میں کلیدی کردار ادا کرنے والے میجر (ر) عامر کو طالبان کی مذاکراتی کمیٹی کے ارکان بھی منانے  کے لئے ان سے ملاقات کریں گے۔ میجر (ر) عامر طالبان مذاکراتی کمیٹی کے بعض ارکان کے سیاسی ایجنڈے پر ’’نالاں‘‘ ہیں۔ اس سے قبل میجر (ر) عامر نے اپنے آپ کو طالبان کے ساتھ مذاکراتی عمل سے علیحدہ کرنے کا اعلان کیا۔ وہ وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان سے ملاقات کرکے مذاکراتی عمل سے  الگ ہونے کی وجوہات سے آگاہ کریں گے۔ نوائے وقت سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بعض مذاکرات کار قیام امن کے نیک کام کو سیاسی مقاصد کے لئے استعمال کر رہے ہیں۔ وفاقی حکومت نے میجر (ر) عامر کے طالبان قیادت سے ذاتی مراسم کی وجہ سے مذاکراتی عمل میں شامل کیا تھا وہ پچھلے کئی ہفتوں سے مذاکرات میں حصہ لے رہے ہیں وہ طالبان شوریٰ سے مذاکرات کیلئے شمالی وزیرستان جاتے رہے ہیں، میجر (ر) عامر طالبان مذاکراتی کمیٹی کے بعض ارکان کی جانب سے مذاکراتی عمل کو سیاسی مقاصد کے لئے استعمال کرنے کے  خلاف تھے۔ میجر عامر کے مشورہ پر حکومت کی پہلی مذاکراتی کمیٹی کو تحلیل کیا گیا تھا۔ میجر (ر) عامر نے حکومت کو اس فیصلے سے آگاہ کر دیا ہے کہ وہ مذاکراتی عمل میں حصہ نہیں لیں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ بعض مذاکرات کاروں نے نیک کام کو سیاسی مقاصد کے حصول کا ذریعہ بنا لیا ہے۔ وہ وزیر داخلہ کو اپنے تحفظات سے آگاہ کریں گے۔ ذرائع کے مطابق میجر (ر) عامر نے بعض ارکان کے میڈیا میں بیانات سے ناراض ہو کر علیحدگی کا فیصلہ کیا۔ آخری اجلاس میں بھی انہوں نے ارکان کیلئے ضابطہ کار کی پابندی پر زور دیا تھا کہ ارکان کوئی خبر میڈیا کو لیک نہ کریں۔ دریں اثناء رکن طالبان رابطہ کار کمیٹی مولانا یوسف شاہ نے کہا ہے کہ میجر (ر) عامر کی ناراضی دور کرنے کی کوشش کریں گے۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میجر (ر) عامر سے رابطہ کر رہے ہیں ان کی موجودگی ہمارے لئے بہت ضروری ہے۔ مذاکراتی عمل کو آگے لیکر جانا ہو گا اس وقت کسی کی ناراضی مناسب نہیں ہو گی۔