شاہدرہ میں 2 سالہ بچہ‘ 6 سالہ بچی مین ہول میں گر کر جاں بحق‘ وزیراعلیٰ کا ذمہ داروں کیخلاف کارروائی کا حکم ‘ ایم ڈی واسا نے 4 افسر معطل کر دیئے

شاہدرہ میں 2 سالہ بچہ‘ 6 سالہ بچی مین ہول میں گر کر جاں بحق‘ وزیراعلیٰ کا ذمہ داروں کیخلاف کارروائی کا حکم ‘ ایم ڈی واسا نے 4 افسر معطل کر دیئے

لاہور/ فیروزوالا (سٹاف رپورٹر +خصوصی نامہ نگار + نامہ نگار) تھانہ شاہدرہ کے علاقے میں رکشہ ڈرائیور کا 2 سالہ بیٹا اور مزدور کی 6 سالہ بیٹی کھلے مین ہول میں گر کر جاں بحق ہوگئے۔ ننھے بچوں کی ہلاکت پر و الدین اور رشتہ دار غم سے نڈھال جبکہ اہل علاقہ غمزدہ ہوگئے۔ واقعات کے فوری بعد اہل علاقہ نے اپنی مدد آپ کے تحت کھلے مین ہولز پر سلیبیں رکھ کر انہیں بند کیا۔ معلوم ہوا ہے شاہدرہ کے علاقہ فرخ آباد میں رکشہ ڈرائیور احسن کا 2 سالہ بیٹا زین گھر سے باہر آیا تو اسی دوران ننھا زین مین ہول میں جاگرا۔ والدین بچے کو تلاش کرتے رہے۔ بعد ازاں انہوں نے دیکھا زین مین ہول میں پڑا تھا، اسے باہر نکالا تو وہ جاں بحق ہوچکا تھا۔ دوسرا واقعہ شاہدرہ کے علاقہ فضل پارک میں پیش آیا، محنت کش سفارش کی 6 سالہ ننھی بیٹی منہال گلی میں دوسرے بچوں کے ساتھ کھیلتے ہوئے کھلے مین ہول میں جاگری۔ بچوں کے شور مچانے پر اہل علاقہ نے منہال کو مین ہول سے باہر نکالا تو بھی جاں بحق ہوچکی تھی۔ این این آئی کے مطابق ڈھائی سالہ بچے کے زین ورثا نے واسا کی نا اہلی کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے دونوں واقعات کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کر لی اور ذمہ داروں کیخلاف سخت قانونی کارروائی کا حکم دیا ہے جبکہ متاثرہ خاندانوں کیلئے پانچ ‘ پانچ لاکھ روپے امداد کا اعلان کیا گیا ہے۔پیپلز پارٹی پنجاب نے واقعات پر اسمبلی سیکرٹریٹ میں تحریک التوائے کار جمع کرادی۔ پارلیمانی سیکرٹری خواجہ عمران نذیر اور ڈی سی او ڈاکٹر احمد جاوید قاضی سات سالہ مناہل کے اہل خانہ سے تعزیت کیلئے انکی رہائشگاہ پر پہنچے۔ اس موقع پر خواجہ عمران نذیر نے دونوں متاثرہ خاندانوں کیلئے وزیراعلیٰ کی طرف سے پانچ ‘ پانچ لاکھ روپے کی مالی امداد کا اعلان کیا۔ خصوصی نامہ نگار کے مطابق ایم ڈی واسا ڈاکٹر جاوید اقبال نے فرخ آباد میں بچے کے مین ہول میں گرنے کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے واقعہ کی تحقیقات کیلئے ڈائریکٹر ایڈمن محمد عرفان اور ڈائریکٹر پی اینڈ ڈی شکیل کشمیری پر مشتمل دو رکنی انکوائری کمیٹی تشکیل دیدی ہے۔ ایم ڈی واسا نے ایس ڈی او فرخ آباد امتیاز گورائیہ، ایس ڈی او شاہد رمضان، سب انجینئر رانا عاطف اور ڈبلیو ایل آئی غلام سرور کو کو فوری معطل کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں جبکہ ایکسئین رانا عبدالمنان کو چارج شیٹ اور ڈائریکٹر اصغر بھلی کی جواب طلبی کر لی ہے۔ فیروز والا سے نامہ نگار کے مطابق ورثا اور محلے داروں نے اس سانحہ پر شدید احتجاج کیا۔ پولیس شاہدرہ نے واسا کے ایس ڈی او اور دیگر اہلکاروں کیخلاف رپورٹ درج کرلی۔ خواجہ عمران نذیر ملک ریاض ڈی سی لاہور موقع پر پہنچ گئے۔ لوگوں نے شکایت کی واسا شاہدرہ کے افسر اور اہلکار رشوت لے کر مین ہول کے ڈھکن دیتے ہیں جس پر خواجہ عمران نذیر نے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کا حکم دیا۔ ایم ڈی واسا نے فرائض میں غفلت برتنے پر ایس ڈی او واسا فرخ آباد امتیاز احمد گورائیہ اور داروغہ غلام سرور کو معطل کردیا۔