پیپلز پارٹی نے بھی وزیراعظم اور انکے خاندان کی نااہلی کیلئے ریفرنس دائر کر دیا

خبریں ماخذ  |  ویب ڈیسک
 پیپلز پارٹی نے بھی وزیراعظم  اور انکے خاندان کی نااہلی کیلئے ریفرنس دائر کر دیا

 تحریک ا نصاف کے بعد پاکستان پیپلز پارٹی نے بھی وزیراعظم نواز شریف اور انکے خاندان کی نااہلی کیلئے الیکشن کمشن میں پٹیشن دائر کردی۔ پیپلز پارٹی کے سیکر ٹری جنرل لطیف کھوسہ کی قیادت میں پارٹی رہنماﺅں اور وکلا کے ایک وفد کی طرف سے الیکشن کمشن میں جمع کرائی گئی پٹیشن میں وزیراعظم نواز شریف، وزیراعلی پنجاب شہباز شریف، وفاقی وزیرخزانہ اسحاق ڈار، رکن قومی اسمبلی حمزہ شہباز اور کیپٹن (ر)صفدر عباسی کو پٹیشن میں نامزد کیا گیا ہے، پٹیشن میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ وزیراعظم اور دیگر نے الیکشن کمشن میں پیش کئے گئے گوشواروں میں اپنی اور اپنے خاندان کی غیر ملکی جائےدادیں اور اثاثے ظاہر نہیں کئے جب کہ وزیراعظم نے اپنے انکم ٹیکس گوشواروں میں بھی غلط بیانی کی، وزیراعظم کے صاحبزادوں کی جانب سے بیرون ملک بنائی گئی آف شور کمپنیوں کےلئے منی لانڈرنگ کے ذریعے ملک سے پیسہ باہر بھیجا گیا جو کہ جرم ہے، وزیراعظم صادق امین نہیں رہے اور آرٹیکل 62،63پر پورا نہیں اترتے نااہل قرار دیا جائے۔ 74صفحات پر پٹیشن کے ساتھ تمام دستاویزی ثبوت بھی دیئے گئے ہیں۔ الیکشن کمشن کے حکام نے پیپلز پارٹی کے رہنماﺅں سے نااہلی پٹیشن وصول کر لی ہے اور اب چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر)سردار رضا خان اور الیکشن کمشن کے چاروں ممبران نااہلی پٹیشن کا جائزہ لینے کے بعد اس کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے کا فیصلہ کریں گے۔ اگر پٹیشن قابل سماعت قرار پائی تو اس کی سماعت کیلئے باقاعدہ تاریخ کا اعلان کر کے فریقین کو نوٹسز جاری کر دئےے جائیں گے۔ پٹیشن دائر کر نے کے بعد الیکشن کمشن کے گیٹ پر میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے لطیف کھوسہ نے کہا کہ میثاق جمہوریت اس بات پر نہیں تھی کہ کرپشن کرو تو ہم ساتھ دیں گے، پیپلزپارٹی کسی غیر قانونی یا غیرآئینی عمل کا حصہ نہیں بنے گی ، کرپشن اوردھاندلی کا ساتھ نہیں دے سکتے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف اور ان کے خاندان نے لوٹ کھسوٹ کی ہے ، پارلیمانی کمیٹی میں حکومتی ارکان نواز شریف کو بچانے کی کوششیں کر رہے ہیں، چیف جسٹس نے ٹی او آر مسترد کر کے حکومت کے منہ پر طمانچہ مارا۔ انہوں نے کہا کہ3 اپریل سے اب تک ہم نے وزیراعظم کو شفاف تحقیقات کا موقع دیا، الیکشن کمشن کافرض ہے کہ کوئی غیر دیانتدارشخص اسمبلیوں تک نہ پہنچ پائے، الیکشن 2013 میں نواز شریف اور انکاخاندان ساڑھے6 ارب کاڈیفالٹر تھا۔ وزیر اعظم 2014 میںبھی اگر ادائیگی کرتے ہیں تو بھی وہ نااہل ہیں۔