پاکستان ایران گیس پائپ لائن کی تعمیر، چینی کمپنی کو کنٹریکٹ دیدیا گیا

خبریں ماخذ  |  ویب ڈیسک
پاکستان ایران گیس پائپ لائن کی تعمیر، چینی کمپنی کو کنٹریکٹ دیدیا گیا

 پاکستان نے گوادر پورٹ سے نوابشاہ تک جو ایران پاکستان طویل گیس پائپ لائن کا آخری مقام ہے تک گیس پائپ لائن بچھانے کے لئے چین کے ساتھ معاہدے کو حتمی شکل دیدی۔ ایک ایرا نی خبر رساں ایجنسی نے خصوصی انٹرویو میں وفاقی وزیر پٹرولیم و قدرتی وسائل شاہد خاقان عباسی کے حوالے سے بتایا گیا کہ یہ پائپ لائن پاکستان کو ایرانی گیس کی منتقلی کی صلاحیت رکھتی ہے اور بنیادی طورپر ایران پاکستان گیس پائپ لائن کے بڑے منصوبے کا حصہ ہے۔شاہد خاقان عباسی نے مزید کہا کہ ایک چینی کمپنی جس کا نام ظاہر نہیں کیا گیا قریباً دو ماہ میں متوقع پائپ لائن کے بارے میں آپریشن کا آغاز کررہی ہے اور اس منصوبے کو 2017ءتک مکمل کر لے گی۔ 700کلومیٹر طویل پائپ لائن تکمیل کے بعد گوادرپورٹ اور ایرانی سرحد کے درمیان صرف 80کلومیٹر کے فاصلے پر عملدرآمد کرنا باقی رہ جائے گا،آئی پی پائپ لائن میں پاکستان کی دلچسپی کے فقدان بارے میں میڈیا قیاسی آرائی کو مسترد کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ قیاس آرائیاں”قطعی بے بنیاد“ ہیں۔چینی کنٹریکٹر کے ساتھ معاہدے سے پائپ لائن کے 80فیصد کی تعمیر یقینی ہو جائے گی۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پابندیوں کی وجہ سے آئی پی گیس پائپ لائن پر عملدر آمد میں موجودہ مسائل کے باوجود پاکستان عملدر آمد بارے اقدامات کررہا ہے تاہم انہوں نے کہا کہ یہ امور حل کئے جانے چاہئیں۔