حکومت کی تباہی شروع ہو چکی‘ حکمرانوں....تیر تلواریں تیز کر لو ہمارے سینے حاضر ہیں : الطاف حسین

لندن (اے این این) متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ کارکن آزادکشمیر میں انتخابات دوبارہ کرانے کیلیے درخواست دائرکریں، چیف جسٹس ان جھرلو انتخابات کا نوٹس لیں اور آئین اور قانون کو حرکت میں لائیں، ایم کیو ایم کو ریاستی جبر سے ختم کرنے کی سوچ کبھی پوری نہیں ہوگی،کشمیریوں کے جمہوری حق پر ڈاکہ ڈال کر انکا جمہوری حق سلب کرلیا گیا، ہمیں کڑے وقت میں حکومت کا ساتھ دینے پر یہ صلہ دیاگیا،آج سے حکومت کی تباہی کا آغاز ہوگیا، صدر زرداری کوصدارت کے لئے نامزدکرنا ہمارا جرم تھا، حکومتی شخصیت قسم کھاکر مجھے کہتی رہی ہم دھوکا نہیں دینگے،آج وہی شخصیت کہہ رہی ہے رینجرزکی نفری نہ ہونے کی وجہ سے الیکشن ملتوی کیے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار اتوار کی شام کو نائن زیرو کے قریب ایم کیو ایم کے جنرل ورکرز اجلاس سے اپنے خطاب میں کیا، انہوں نے کہا خداکی قسم ہم دل پر پتھر رکھ کرحکومت کا ساتھ دیتے رہے، چیف جسٹس آف پاکستان ان جھرلو انتخابات کا نوٹس لیں اور آئین اور قانون کو حرکت میں لائیں۔ ایم کیو ایم کو ریاستی جبر سے ختم کرنے کی سوچ کبھی پوری نہیں ہوگی،کشمیریوں کے جمہوری حق پر ڈاکہ ڈال کر انکا جمہوری حق سلب کر لیا گیا۔ الطاف حسین نے کہا کہ آزاد کشمیر انتخابات کو مشکوک نہیں بلکہ ناقابل قبول بنادیاگیا، ہمیں کہاگیاآپ ایک نشست پرالیکشن لڑیں اور ایک پیپلزپارٹی کو دیدیں، قائد تحریک نے کہا کہ ایم کیو ایم نے ہر مشکل وقت میں موجودہ حکومت کاساتھ دیا،کیا حکومت نے بینظیربھٹوکے قاتلوں کوگرفتارکرلیا،آزادکشمیرکاآج کا الیکشن حکومتی طاقت کے بل پرہواہے، یہ انتخابات مکمل طور پرغیرقانونی اور غیر آئینی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت جمہوری نہیں آمریت سے بدترہے، ایم کیو ایم کوکشمیر انتخابات سے دور رکھ کرآمریت کی یاد تازہ کردی گئی، موجودہ حکومت نے جمہوری روایات کا جنازہ نکال دیا، حکومت نے حلیف کی پیٹھ میں خنجرگھونپ کرآمریت کی یاد تازہ کردی،آئندہ 26 جون یوم مذمت کے طور پر منایا جائیگا، موجودہ حکومت نے انتخابات کے بائیکاٹ پر مجبورکیا۔ انھوں نے کہا کہ کیا صدر زرداری کو صدارت کے لئے نامزدکرنا ہماراجرم تھا،حکمرانو تیر تلواریں تیزکرلوہمارے سینے تیارہیں، الیکشن ملتوی کیے،ایم کیوایم حکومت سے الگ ہوجاتی توخداکی قسم حکومت آج اقتدار میں نہ ہوتی۔ ایم کیو ایم کا وفاقی و صوبائی حکومت سے علیحدگی کا امکان ہے۔ وقت نیوز کے مطابق ایم کیو ایم نے مطالبہ کیا ہے کہ کراچی کی ملتوی ہونے والی آزاد کشمیر کی نشستوں پر 15روز میں الیکشن کرائے جائیں ایم کیو ایم کے وفاقی و صوبائی وزراءنے اپنے استعفے رابطہ کمیٹی کو جمع کرا دیئے ہیں اور اعلان رابطہ کمیٹی کے جنرل ورکرز اجلاس میں کیا جائے گا۔
الطاف حسین