بانکی مون ڈرون حملوں سے معصوم بچوں کی اموات کا نوٹس لیں: پاکستان

بانکی مون ڈرون حملوں سے معصوم بچوں کی اموات کا نوٹس لیں: پاکستان

نیویارک (اے این این) پاکستان نے ایک بار پھر اقوام متحدہ میں ڈرون حملوں کا معاملہ اٹھاتے ہوئے واضح کیا ہے کہ یہ حملے ملکی خودمختاری اور بین الاقوامی قوانین کی مسلسل خلاف ورزی ہیں۔ اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب مسعودخان نے جنرل اسمبلی کی سوشل ہیومینٹیرین اینڈ کلچرل کمیٹی کے اجلاس میں اظہارخیال کرتے ہوئے قبائلی علاقوں میں ڈرون حملوں کے فوری طورپرخاتمے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ مزید ہلاکتوں سے بچا جا سکے۔ افغانستان کے ساتھ اسکے سرحدی علاقوں پر امریکی ڈرون حملے انسانی حقوق کی شدید خلاف ورزی ہے۔ اسکے ذریعے دس سال کے دوران بڑی تعداد میں بچے بھی لقمہ اجل بنے ہیں اسلئے انہیں بند کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کے قبائلی علاقوں میں ڈرون حملے نہ صرف ملکی خودمختاری بلکہ انسانی حقوق کے بارے میں بین الاقوامی قانون کی بھی مسلسل خلاف ورزی ہیں ۔انہوں نے گزشتہ ماہ جنرل اسمبلی میں وزیراعظم نوازشریف کے خطاب کاحوالہ دیتے ہوئے کہاکہ وزیراعظم نے بھی مزیدہلاکتوں سے بچنے کےلئے ڈرون حملے روکنے پرزوردیاتھا۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بانکی مون ان حملوں کے نتیجے میں معصوم انسانی جانوں کے ضیاع بالخصوص بچوں کی اموات کا نوٹس لیں۔
مسعود خان