لاہورہائی کورٹ نے لوڈ شیڈنگ اوربلوں میں اضافے کے خلاف کیس کی سماعت کے دوران واپڈا سے اہم شخصیات کے علاقوں میں بجلی کی فراہمی کا ریکارڈ طلب کرلیا۔

لاہورہائی کورٹ نے لوڈ شیڈنگ اوربلوں میں اضافے کے خلاف کیس کی سماعت کے دوران واپڈا سے اہم شخصیات کے علاقوں میں بجلی کی فراہمی کا ریکارڈ طلب کرلیا۔

کیس کی سماعت لاہور ہائیکورٹ کے جج جسٹس عمرعطاء بندیال نے کی۔ انہوں نے واپڈا اور پیپکو حکام کو ہدایت کی کہ صارفین کو بجلی کے ایمرجنسی تعطل کے بارے میں بھی آگاہ رکھا جائے، اس مقصد کے لئے ایک ویب سائٹ بھی ہونی چاہیے۔  اس موقع پر واپڈا اور پیپکو نے گھریلو اور کمرشل صارفین کے لئے لوڈ شیڈنگ کا شیڈول بھی پیش کیا۔ فاضل عدالت میں درخواست گزار امتیاز رشید قریشی نے موقف اختیار کیا تھا کہ واپڈا اور پیپکو کی جانب سے پیش کیا جانے والا لوڈ شیڈنگ کا شیڈول حقیقت پر مبنی نہیں اور بجلی غیراعلانیہ طور پر کئی، کئی گھنٹے بند رہتی ہے ۔ فریقین کے دلائل سننے کے بعد کیس کی  سماعت پندرہ جون تک ملتوی کردی گئی ۔