انٹرنیٹ کی سماجی ویب سائٹ فیس بک پر گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف پاکستان سمیت دنیا بھر میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ 

انٹرنیٹ کی سماجی ویب سائٹ فیس بک پر گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف پاکستان سمیت دنیا بھر میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ 

مختلف مذہبی جماعتوں ،دینی تنظیموں ، وکلاء اور سماجی حلقوں کی جانب سے اس شرمناک حرکت پرملک کے مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے ،ریلیاں اور شٹرڈاؤن ہڑتالوں کا سلسلہ جاری ہے ۔ آج ضلع سرگودہا بھر میں مرکزی انجمن تاجران، انجمن علما کرام، سول سوسائیٹی اور دیگر تنظمیوں کی کال پر مکمل ہڑتال اور شٹرڈاؤن کیا جا رہا ہے ۔ اس موقع پر شہر بھر کی تمام چھوٹی بڑی مارکیٹیں بند ہیں جب جلوس اور ریلیاں بھی نکالی جارہی ہیں ۔  ملت اسلامیہ ایجوکیشنل ویلفیئر سوسائیٹی کے زیراہتمام گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کے خلاف راولپنڈی میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ۔ اس موقع پر
مظاہرین کا کہنا تھا کہ خاکوں کی دوبارہ اشاعت اورانٹرنیٹ پرمقابلے کرکے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح
کیا گیا ہے اور اس کا حل اب صرف جہاد ہے ۔ دوسری جانب فیس بک کے بانی مارک زوکربرگ نے امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ کو ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ وہ تسلیم کرتے ہیں فیس بک کی پالیسیوں میں کئی خامیاں ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ حالیہ دو بڑی غلطیوں میں ایک شان رسالت میں توہین کی مذموم کوشش اور دوسری برطانیہ میں بچوں سے متعلق نا پسندیدہ مواد کی تشہیر ہے۔ انہوں نے کہا کہ سوشل ویب سائٹ کی پالیسیوں میں تبدیلی ناگزیر ہوچکی ہے، تاکہ فیس بک ارکان کی تنقید و مخالفت سے بچا جا سکے۔