سمگلنگ روکنے والے ادارے ناکام ہو چکے تنظیم نو کی ضرورت ہے: گورنر بلوچستان

سمگلنگ روکنے والے  ادارے ناکام ہو چکے  تنظیم نو کی  ضرورت ہے:  گورنر بلوچستان

کوئٹہ ( این این آئی) گورنر بلوچستان محمد خان اچکزئی نے کہا ہے کہ ایرانی  پٹرول ودیگر اشیاء کی سمگلنگ کی روک تھام کرنیوالے ادارے ناکام ہیں، انکی تنظیم نو کی ضرورت ہے۔ انہوں نے یہ بات گزشتہ روز  کوئٹہ میں مقامی گرلز سکول کی افتتاحی تقریب کے بعد صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔ گورنر نے کہا کہ صوبے میں گزشتہ آٹھ نو ماہ کے دوران امن وامان کی صورتحال بہتر ہوئی ہے اور مجھے یقین ہے کہ آئندہ کچھ عرصے میں مزید حالات بہترہوں گے ۔ انہوں نے  کہا کہ ناراض بلوچوں سے مذاکرات کا مینڈیٹ  وزیراعلیٰ بلوچستان کے پاس ہے۔ وہ اس کو دیکھ رہے ہیں۔ اس موقع پر انکا کہناتھا کہ طالبان سے مذاکرات کی کامیابی کے اثرات پورے ملک پر ہی نہیں بلکہ پورے خطے پر پڑیں گے اور اگر خدانخواستہ مذاکرات ناکام ہوئے تو اس کا نتیجہ بہت خطرناک ہوگا ۔انکا کہنا تھا کہ ایف سی کو امن وامان کے قیام کیلئے بار بار اس لئے اختیار دیا جاتا ہے کہ پولیس اپنا کردار ادا نہیں کرپاتی۔ گورنر بلوچستان نے کہاکہ 18ویں ترمیم کے بعد تعلیم صوبائی سبجیکٹ ہے اور ہم یونیورسٹیز کو درپیش مسائل حل کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔