پنجاب اسمبلی: کورم کی نشاندھی پر اپوزیشن رکن سامعہ امجد کے خلاف ”ماسی‘ ماسی“ کی آوازےں

لاہور (خبر نگار) پنجاب اسمبلی میں کورم کی نشاندھی پر اپوزیشن کی خاتون رکن اسمبلی ڈاکٹر سامعہ امجد کیخلاف سرکاری اراکین اسمبلی نے \\\"ماسی\\\' ماسی\\\" اور ماسی مصیبتے کے نعرے لگائے۔ جس پر سپیکر رانا اقبال نے انہیں روکا مگر نعرہ بازی جاری رہی۔ ڈاکٹر سامعہ امجد نے 10 بجکر 25 منٹ پر یہ کہہ کر کورم کی نشاندھی کی تھی کہ اجلاس پہلے ہی سوا گھنٹے کی تاخیر سے شروع ہوا ہے اور اب کورم بھی پورا نہیں ہے۔ ڈاکٹر سامعہ امجد کے کورم کی نشاندھی کرنے پر مسلم لیگ (ن) کی عارفہ خالد پرویز نے احتجاج کیا اور کہا کہ بجٹ اجلاس کے دوران کورم کی نشاندھی غلط ہے۔ اس دوران سرکاری اراکین اسمبلی نے ماسی\\\' ماسی کی آوازیں لگائیں جس پر ڈاکٹر سامعہ امجد نے جواب میں کہا کہ \\\"اپنے آپ میں رہو\\\"۔ جس پر سرکاری اراکین نے انہیں ماسی مصیبتے کہہ کر پکارا۔ ڈاکٹر سامعہ امجد نے سپیکر سے کہا کہ ان اراکین اسمبلی کی تربیت کا بندوبست کیا جائے۔ پانچ منٹ کے بعد کورم پورا ہوا اور سپیکر نے کورم پورا ہونے کا اعلان کیا تو سرکاری ارکان نے ایک بار پھر ماسی\\\' ماسی کے نعرے لگائے۔