آئینی اصلاحات پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس پیر کو طلب‘ رضا ربانی کنونیئر مقرر

اسلام آباد (آن لائن+ اے پی پی) ستروہویں ترمیم کے خاتمے اور آئین میں اصلاحات کیلئے قائم خصوصی پارلیمانی کمیٹی کا پہلا اجلاس 29 جون کو پارلیمنٹ ہائوس میں طلب کر لیا گیا ہے جبکہ رضا ربانی کو کمیٹی کا کنونیئر مقرر کیا گیا ہے۔ گذشتہ روز سپیکر قومی اسمبلی فہمیدہ مرزا کی زیرصدارت کمیٹی کا مشاورتی اجلاس پارلیمنٹ ہائوس میں ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ کمیٹی اپنے چیئرمین کا تقرر خود کرے گی اور قواعد و ضوابط بھی خود بنائے گی۔ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سپیکر نے کہا کہ 27 رکنی کمیٹی میں پارلیمنٹ میں موجود تمام سیاسی جماعتوں کی نمائندگی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمیٹی کا ٹاسک آسان نہیں۔ بالخصوص بلوچستان، صوبائی خودمختاری، میثاق جمہوریت عدلیہ اور فوج کے متعلق بھی کمیٹی پر بھاری ذمہ داریاں عائد ہیں۔ امید ہے کہ پارلیمانی کمیٹی جلد متفقہ سفارشات مکمل کر لیں گی۔ انہوں نے واضح کیا کہ چودھری نثار نے انہیں خط لکھا ہے کہ وہ بیرون ملک جا رہے ہیں اس وجہ سے اجلاس میں شرکت نہیں کر سکتے تاہم انہوں نے رکن بننے سے انکار نہیں کیا جبکہ اسحاق ڈار‘ احسن اقبال اور سردار مہتاب عباسی اور اے این پی کے سینئر رہنما حاجی عدیل موجود تھے اور اسفند یار نے اپنی جگہ افراسیاب خٹک کا نام دیا ہے۔ فہمیدہ مرزا نے کہا کہ پوری قوم کی نظریں کمیٹی پرلگی ہوئی ہیں جسے انتہائی گھمبیر مسائل میں تاریخی کردار ادا کرنے کیلئے دن رات ایک کرنا ہوگا۔
آئینی اصلاحات کمیٹی