ریاست کیخلاف اعلان جنگ کرنیوالوں کو یہاں کون لایا: جسٹس جواد ایس خواجہ

خبریں ماخذ  |  خصوصی نامہ نگار
ریاست کیخلاف اعلان جنگ کرنیوالوں کو یہاں کون لایا: جسٹس جواد ایس خواجہ

چیف جسٹس ناصرالملک کی سربراہی میں فل کورٹ نے اٹھارویں،اکیسویں ترامیم،اور فوجی عدالتوں کے قیام کےخلاف درخواستوں کی سماعت کی،عدالت میں طالبان کی قتل وغارت کی ویڈیو دکھائی گئیں،جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہا کہ ویڈیوز دکھانے کا مقصد یہ ہے کہ ریاست کیخلاف اعلان جنگ ہوچکا ہے،اٹارنی جنرل سلمان اسلم بٹ نے کہا کہ ریاست کیخلاف جنگ کا اعلان کرنیوالوں کا ٹرائل فوجی عدالتوں میں ہوگا وہ قانون اورآئین کونہیں مانتے،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہا کہ داعش کو دہشتگرد تنظیم قرار دینے کا نوٹیفکیشن دکھائیں،جسٹس ثاقب نےریمارکس دیئے کہ اگر ریاست محفوظ نہیں توپیچھے کیا رہ گیا،جسٹس آصف سعید کھوسہ کا کہنا تھا کہ عام عدالتیں فوجی عدالتوں کے ٹرائل کا جائزہ نہیں لے سکتیں، کیس کی مزید سماعت کل ہوگی۔