قادری کسی شرط پر جہاز سے باہر نہیں آئے، آئندہ بھی مذاکرات میں کردار ادا کرونگا: گورنر پنجاب

قادری کسی شرط پر جہاز سے باہر نہیں آئے، آئندہ بھی مذاکرات میں کردار ادا کرونگا: گورنر پنجاب

لاہور (نوائے وقت رپورٹ) گورنر پنجاب چودھری سرور نے کہا ہے کہ میں طاہرالقادری کا مشکور ہوں کہ انہوں نے مجھ پر اعتماد کیا۔ میں وزیراعلیٰ اور وزیراعظم کے اعتماد کا بھی شکرگزار ہوں۔ اللہ کا شکر ہے کہ مسئلہ افہام وتفہیم سے حل ہو گیا۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے گورنر نے کہا میں نے ملاقات میں طاہرالقادری سے لاہور سانحہ میں ان کے کارکنوں کی شہادت پر افسوس کا اظہار کیا اور انہیں یقین دلایا کہ ہماری بھرپور کوشش ہو گی کہ ذمہ داروں کو سزا دی جائے۔ میں نے یقین دلایا کہ اگر انکے ذہن میں کوئی حملے کا شبہ ہے تو میں انکے ساتھ گاڑی میں بیٹھ کر جائوں گا۔ میں انکے ساتھ ہسپتال گیا جہاں میں نے بھی گولیوں کا نشانہ بننے والوں کی عیادت کی۔ گورنر پنجاب نے کہا کہ تنائو کی صورتحال میں کمی لانے اور مذاکرات کیلئے جو بھی کردار ادا کرسکتا ہوں آئندہ بھی کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ طاہرالقادری کسی شرط کے تحت جہاز سے باہر نہیں آئے۔ انہوں نے کوئی مطالبات نہیں کیے۔ میری جو باتیں ہوئیں وہ افہام تفہیم کو اپنانا چاہتے ہیںوہ تصادم کی طرف نہیں جانا چاہتے۔ وقت بتائے گا کہ مستقبل میں کیا ہوتا ہے۔ طاہرالقادری بھی نہیں چاہتے کہ کوئی غیرجمہوری قوت اقتدار پر قبضہ کرے۔ میں نے ان سے کھل کر بات کی۔ ایسا بالکل نہیں کہ وہ یہاں پر جمہوریت کا خاتمہ چاہتے ہیں۔ جب لوگ غصے میں ہوں تو کچھ باتیں ہو جاتی ہیں۔ جلسوں کے بارے میں انہوں نے کہا کہ عمران خان جلسے کر رہے ہیں انہیں کہیں روکا نہیں گیا جو بھی سیاسی جماعت جلسے کرنا چاہے گی ہمیں کیا اعتراض ہو سکتا ہے۔ عدالتی کمیشن میں جو بھی قصوروار ٹھہرایا جائے گا ان کو سزا دی جائے گی یہ اعتماد سازی کے اقدامات ہوتے ہیں۔
گورنر پنجاب