سکیورٹی خدشات: ڈاکٹر قدیر کو گوجرانوالہ جانے سے روک دیا گیا

اسلام آباد (اے این این) وفاقی وزارت داخلہ نے سکیورٹی خدشات کی بنا پر ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو گوجرانوالہ جانے سے روک دیا۔ ذرائع کے مطابق ہفتہ کو ڈاکٹر قدیر خان نے گوجرانوالہ میں ایک فلاحی کالج کی تقریب میں شرکت کیلئے جانا تھا تاہم اے ڈی سی جی آغا علی محمد اور ایس پی سٹی ساجد کیانی نے ڈاکٹر قدیر خان سے ملاقات کی اور انہیں وزارت داخلہ کی طرف سے ایک خط پہنچایا جس کے بعد ان کا دورہ ملتوی ہو گیا جبکہ سکیورٹی کےلئے آنے والے سکواڈ کو بھی واپس بھیج دیا گیا۔ دریں اثناءنجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر قدیر خان نے بتایا کہ وہ گوجرانوالہ میں ایک فلاحی کالج کی تقریب میں شرکت کیلئے جانا چاہتے ہیں لیکن سکیورٹی اہلکاروں نے انہیں یہ کہہ کر وہاں جانے سے روک دیا کہ ان کی جان کو خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں نقل و حمل کے معاملے میں سابقہ حکومت کے مقابلے میں اب زیادہ سختیوں کا سامنا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وہ عدالتوں کے فیصلے کا احترام کرتے ہیں اور ان کے فیصلوں پر عمل کرنے کے پابند ہیں۔