جماعت اسلامی نے بھی کراچی میں فوجی آپریشن کی مخالفت کردی ، فوج بلانے سےصورتحال مزید پچیدہ ہوگی، قیام امن کے لیے ایم کیو ایم کو اقتدار سے الگ کرنا ہوگا۔ سید منورحسن

جماعت اسلامی نے بھی کراچی میں فوجی آپریشن کی مخالفت کردی ، فوج بلانے  سےصورتحال مزید پچیدہ ہوگی، قیام امن کے لیے ایم کیو ایم کو اقتدار سے الگ کرنا ہوگا۔ سید منورحسن

ان خیالات کا اظہار امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے لاہور پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ سید منور حسن نے کہا کہ قتل و غارت کے ذریعے کراچی کو غیرمستحکم کرنے کی سازش کی جارہی ہے جس میں مختلف جماعتوں کے رہنمائوں کے ساتھ ساتھ عالمی مافیا بھی شامل ہے۔ امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ یہ حالات گذشتہ دس سالوں کا شاخسانہ ہیں اور ان پر قابو پانے کیلئے مسلح افواج کو طلب کرنے کے بجائے پیپلز پارٹی اپنی اتحادی جماعت متحدہ قومی موومنٹ کو اقتدار سے علیحدہ کرے۔ انکا کہنا تھا کہ فوج نے بلوچستان اور خیبرپختونخواہ میں جو کچھ کیا ہے اس کے بعد وہ کراچی میں ملٹری اپریشن کی حمائت نہیں کریں گے کیونکہ اس سے معاملہ مزید پچیدہ ہو جائے گا۔
سید منور حسن نے اس موقع پر اعلان کیا کہ جماعت اسلامی اہل کراچی کے ساتھ اظہاریکجہتی کے لیے جمعہ کو ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ کراچی سازش میں اس وقت بین الااقوامی قوتیں برے طریقے سے ملوث ہیں جبکہ امریکہ چین اور ایران پر قابو پانے کیلئے طرح طرح کے اقدامات کررہا ہے۔