پنجاب میں ینگ ڈاکٹرزکی جانب سے سروس سٹرکیچر کے حصول کے لیے ہڑتال چھٹے روز بھی رہی جبکہ صوبائی حکومت ڈاکٹرزکومنانے میں ناکام ہوگئی

پنجاب میں ینگ ڈاکٹرزکی جانب سے سروس سٹرکیچر کے حصول کے لیے ہڑتال چھٹے روز بھی رہی جبکہ صوبائی حکومت ڈاکٹرزکومنانے میں ناکام ہوگئی

ہڑتال کے باعث پنجاب بھرکے تمام سرکاری ہسپتالوں کی اوپی ڈیزبندہیں جبکہ ہڑتالی ڈاکٹرز نے تمام عملے کو بھی کام کرنے سے منع کردیا ہے، ینگ ڈاکٹر کے ساتھ ساتھ سینئیر ڈاکٹرز بھی اپنی سیٹوں سے غائب ہیں اورمریضوں کا چیک اپ نہیں کیا جارہا۔مریضوں کا کہنا ہے کہ وہ دوردرازعلاقوں سے کرایہ لگا کرآتے ہیں اورعلاج کی سہولیات نہ ملنے پر انہیں شدید مایوسی کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ ینگ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ جب تک اُن کے مطالبات تسلیم نہیں کیے جاتے ہڑتال جاری رہے گی۔ دوسری طرف پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کا اجلاس کل ہورہا ہے جس میں ینگ ڈاکٹرزکی ہڑتال کا ساتھ دینے یا نہ دینے کا فیصلہ کیا جائے گا۔