ملک بھرمیں بجلی کے ستائے لوگ سڑکوں پر، لوڈ شیڈنگ کا جن پھر بھی دندناتا پھر رہا ہے۔

ملک بھرمیں بجلی کے ستائے لوگ سڑکوں پر، لوڈ شیڈنگ کا جن پھر بھی دندناتا پھر رہا ہے۔

راولپنڈی میں تاجرکاروبار بند کرکے سڑکوں پر نکل آئے۔ مختلف علاقوں میں ٹائر جلا کر سڑکیں بلاک کردیں۔ جہلم میں اٹھارہ سے بیس گھنٹوں کی لوڈ شیڈنگ کے خلاف تاجروں نے کاروبار بند کرکے احتجاج کیا۔ چوک اہل حدیث سے واپڈا آفس تک ریلی نکالی گئی۔ مظاہرین نے واپڈا آفس کا گھیراؤ کرکے حکومت کے خلاف نعرے لگائے۔ اس کے بعد مظاہرین نے جی ٹی روڈ بلاک کردی۔ ڈیرہ غازی خان میں آل پنجاب تاجران کی اپیل پر شٹرڈاؤن ہڑتال کی گئی۔ مظاہرین نے صدر بازار سے ریلی نکالی اور ٹائر جلا کر سڑک بلاک کردی۔ ڈیرہ اسماعیل خان میں سخت گرمی میں چودہ سے سولہ گھنٹے لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے پانی کی شدید قلت ہوگئی ہے۔ پنڈدادن خان میں لوڈشیڈنگ کے خلاف کاروبار مکمل طور پر بند رہا۔ وکلاء نے بھی لوڈ شیڈنگ کے خلاف عدالتوں کا بائیکاٹ کیا۔ ہارون آباد میں بھی تاجروں کی جانب سے مکمل شٹرڈاؤن کرکے احتجاج کیا گیا۔ فیصل آباد کے صنعتی علاقوں میں غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کا اعلان کیا گیا ہے۔