مذاکرات کیلئے جگہ کا تعین کر لیا، گرین سگنل پر وزیرستان جائینگے: یوسف شاہ

مذاکرات کیلئے جگہ کا تعین کر لیا، گرین سگنل پر وزیرستان جائینگے: یوسف شاہ

پشاور (آئی این پی+ نوائے وقت رپورٹ) طالبان مذاکراتی کمیٹی کے کوآرڈینیٹر مولانا یوسف شاہ نے کہا ہے کہ ملک کو چاروں اطراف سے خطرات لاحق ہیں لیکن جب تک امن قائم نہیں ہوگا چین سے نہیں بیٹھیں گے‘ حکومتی کمیٹی اور طالبان قیادت کی ملاقات کیلئے جگہ کا تعین کر لیا‘ جونہی رابطہ ہوا اور گرین سگنل ملا ہم وزیرستان روانہ ہو جائیں گے۔ وہ تحفظ اہل سنت کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ مذاکراتی عمل کو تمام مکاتب فکر کے لوگوں کی تائید حاصل ہے اور علماء کرام کو قیام امن کیلئے آگے بڑھنا ہوگا۔ مولانا یوسف شاہ نے کہا کہ طالبان کے اہم کمانڈر سے رابطہ کیا جا رہا ہے‘ جونہی رابطہ ہوا اور گرین سگنل ملا ہم وزیرستان روانہ ہو جائیں گے۔ طالبان شوریٰ کی اپنے ایک ساتھی سے مشاورت باقی ہے۔ طالبان نے 300 قیدیوں کی فہرست بطور تجویز دی۔ حکومتی کمیٹی کے ساتھ مل کر دوبارہ طالبان کے پاس جائیں گے۔ سمیع الحق ضعیف ہیں، وزیرستان نہیں جا سکتے۔ اے پی اے کے مطابق حکومت کے ساتھ مذاکرات کے نتیجے میں کسی ممکنہ امن معاہدے کے اطلاق کے حوالے سے تحریک طالبان پاکستان کی قیادت منقسم ہے۔ جنوبی وزیرستان سے تعلق رکھنے والے طالبان کے ایک مضبوط دھڑے کی خواہش ہے کہ کسی بھی ممکنہ امن معاہدے کا اطلاق صرف وزیرستان پر ہو جبکہ طالبان کے سربراہ مولوی فضل اللہ اور دیگر رہنما چاہتے ہیں کہ معاہدے کا اطلاق دیگر قبائلی علاقوں اور ملک کے ان حصوں جہاں طالبان موجود ہیں پر بھی ہو۔ باخبر ذرائع کے مطابق تحریک طالبان پاکستان کے جنوبی وزیرستان سے تعلق رکھنے والے کمانڈر خان سید عرف سجنا کے گروپ کا خیال ہے کہ حکومت کے ساتھ جو بھی معاہدہ ہوتا ہے وہ جنوبی اور شمالی وزیرستان کے حوالے سے ہو اور دونوں فریقین یعنی سکیورٹی فورسزاور طالبان ان 2 قبائلی ایجنسیوں میں ایک دوسرے کیخلاف کارروائیاں نہ کریں۔