طالبان نے حالیہ دہشت گردی میں ملوث گروپوں کو تلاش کرنے کی ذمہ داری لے لی: پرویز رشید

طالبان نے حالیہ دہشت گردی میں ملوث گروپوں کو تلاش کرنے کی ذمہ داری لے لی: پرویز رشید

لاہور (آئی این پی) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ طالبان نے ملک میں ہونے والی حالیہ دہشت گردی میں ملوث گروپوں کو تلاش کرنے کی ذمہ داری لی ہے ‘طالبان سے مذاکراتی عمل کے چودھری نثار علی خان فوکل پرسن ہیں بہتر ہو گا کہ سوال جواب کے بجائے ان کو مذاکرات کرنے دیئے جائیں‘ خون خرابے کے بغیر امن کی منزل تک پہنچنا چاہتے ہیں۔ ابھی تک طالبان اور حکومتی مذاکراتی کمیٹی نے مذاکرات کیلئے جگہ کا انتخاب نہیں کیا‘ ہمیں مذاکراتی عمل سے اچھے نتائج کی امید رکھنی چاہیے‘ عدالتیں حکومت کا حصہ ہیں ادارے ایک دوسرے کے متحارب نہیں بلکہ بازو ہیں‘ قومی سلامتی پالیسی کی کوئی ایک شق بھی ایسی نہیں جس میں کسی ایک انٹیلی جنس ادارے کو زیادہ بااختیار نہ کیا گیا ہو ملک میں نوجوانوں سے کھیل کے میدان چھین لئے گئے ہم انہیں میدان واپس دلوائیںگے پاکستانی ٹیم کی کارکردگی جیسی بھی ہو ہم انہیں شاباش ہی دیںگے۔ لاہور میں ایک تقریب کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر پرویزرشید نے کہاکہ کسی دوست ملک کی جانب سے پاکستان کو پہلی بار امداد نہیں دی گئی اس سے پہلے بھی بہت سی امداد ملی ہے اس لئے کسی ایک ملک سے ڈیڑھ ارب ڈالر کی امداد پر زیادہ بات نہ ہی کی جائے تو اچھا ہے، ہمیں کوئی ایسی بات نہیں کرنی چاہیے جس سے ہمارے دوست ملک کی دل آزاری ہو۔ ایک سوال کے جواب میں وفاقی وزیر نے کہاکہ قومی اداروں کے سربراہان کی تقرری کے حوالے سے حکومت کا موقف بالکل واضح اور سامنے آ چکا ہے، امید ہے کہ 30روز کے اندر تمام قومی اداروں کے سربراہان کی تقرری کے معاملے کو پایہ تکمیل تک پہنچادیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں عدلیہ آزاد اور خود مختار ہے لیکن ہمیں یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ عدالتیں بھی حکومت کا حصہ اور سب ملک کیلئے ہی کام کرتے ہیں۔ شیخ رشید کے متعلق ایک سوال پر وفاقی وزیر نے کہاکہ شیخ پیسے جانے پر ناراض ہوتے ہیں لیکن یہ پہلے شیخ ہیں جو ملک میں پیسے آنے پر ناراض ہو رہے ہیں۔