علمائے کرام اور مشائخ نے مقتولین کو قاتلوں کی صف مےں کھڑا کر دیا، الطاف

لندن (ریڈیو مانیٹرنگ) ایم کیو ایم کے رہنما الطاف حسین نے کہا ہے کہ علمائے کرام اور مشائخ نے مقتولین کو قاتلوں کی صف مےں کھڑا کر دیا ہے سیاسی علمائے کرام دو ٹوک موقف کے ساتھ سامنے آئیں ورنہ خاموش رہیں۔ انہوں نے کہا کہ علمائے کرام اپنی اور آنے والی سات پشتوں کےلئے اللہ کے عذاب کو دعوت نہ دیں۔ اپنے بیان مےں انہوں نے کہا کہ جو علمائے کرام اور مشائخ عظام اردو بولنے والے مہاجروں کے اغوا اور اغوا کے بعد انہیں بےدردی سے ذبح کرنے اور ان کی لاشوں کے ٹکڑے ٹکڑے کر کے بوریوں مےں بند کر کے مختلف علاقوں مےں پھینکنے کے واقعات کو دو گروہوں کی لڑائی قرار دے رہے ہےں وہ دراصل بے گناہ مارے جانے والے مظلومین و معصومین اور مقتولین کو بھی برابر کا قصور وار قرار دے کر انہیں بھی شریک جرم و استبداد اور عمل قتل و غارتگری مےں شامل کر رہے ہےں۔ جو علمائے کرام اور مشائخ عظام ایسا عمل کر رہے ہےں انہیں عالم دین تو کجا علمائے حق اور بزرگان دین کے پیروں کی خاک کے برابر بھی قرار نہیں دیا جاسکتا۔ ایسے سیاسی علمائے کرام اور مشائخ عظام سے میری درخواست ہے کہ وہ ”صاف چھپتے بھی نہیں، سامنے آتے بھی نہیں“ کے مصداق عمل کرنے کے بجائے دوٹوک موقف کے ساتھ سامنے آئیں ورنہ خاموشی اختیار کر کے اپنی اور اپنی آنے والی سات پشتوں کےلئے اللہ تعالیٰ کے عذاب کو دعوت نہ دیں۔ انہوں نے کہا کہ آپ صبر کریں اور ایسے عناصر کے بیانات سے ہر گز مشتعل نہ ہوں۔
الطاف حسین