بدین میں متاثرین کی تعداد ایک لاکھ چالیس ہزار تک پہنچ گئی۔ خوراک اور پانی کی قلت نے لوگوں کی مشکلات میں مزید اضافہ کردیا ۔

بدین میں متاثرین کی تعداد ایک لاکھ چالیس ہزار تک پہنچ گئی۔ خوراک اور پانی کی قلت نے لوگوں کی مشکلات میں مزید اضافہ کردیا ۔

طوفانی بارشوں کے بعد آفت زدہ قرار دیئے گئے ضلع بدین کے ریلیف کیمپوں میں متاثرین کی منتقلی کا سلسلہ جاری ہے ،سرکاری اعداد شمار کے مطابق چارسو ریلیف کیمپوں میں متاثرین کی تعدادایک لاکھ چالیس ہزارسے تجاوز کر گئی ہے۔ ادھرساحلی پٹی پرواقع حاجن حجام، کریو بھنڈاری اور یونین کونسل سمیت متعدد دیہات میں ابھی تک تین سے سات فٹ پانی کھڑا ہے جہاں دس لاکھ افراد پھنسے ہوئے ہیں۔ طوفانی بارشوں کے بعدعلاقےمیں صاف پانی کی قلت نے شہری آبادی کو بھی متاثر کیا ہے، بدین میں تالابوں میں پانی کے ذخائر ختم ہوگئے جس سے کئی علاقوں کوفراہمی معطل ہے ۔ شہری علاقوں میں قائم ریلیف کیمپوں میں خوراک کی فراہمی جاری ہے تاہم یہ متاثرین کی بڑی تعداد کے لیے ناکافی ہے۔ متاثرہ علاقوں اور ریلیف کیمپوں میں جلد اور پیٹ کے امراض پھیلنے کی وجہ سےبھی لوگوں کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا ہےجبکہ طبی سہولیات کے فقدان نے صورتحال کو مزید سنگین بنا دیا ہے۔ادھرانتظامیہ کا کہنا ہے کہ ایل بی او ڈی میں پانی کا بہاؤسولہ فٹ سے کم ہوکرساڑھے چودہ فٹ ہوگیا ہے