ڈرون حملے میں حکیم اللہ محسود کا ذاتی محافظ کمانڈر خاورے دو ساتھیوں سمیت ہلاک

ڈرون حملے میں حکیم اللہ محسود کا ذاتی محافظ کمانڈر خاورے دو ساتھیوں سمیت ہلاک

پشاور (رائٹر+ نیٹ نیوز+ نوائے وقت رپورٹ) کرم ایجنسی میں افغانستان کی سرحد کے قریب واقع علاقے میں امریکی ڈرون حملے میں جنوبی وزیرستان میں طالبان کمانڈر خاورے محسود اور اس کے دو ساتھی ہلاک ہو گئے ہیں۔ دو انٹیلی جنس اہلکاروں نے 18 مارچ کو ہونے والے اس امریکی ڈرون حملے کی تصدیق کی ہے۔ کالعدم تحریک طالبان  کے ترجمان نے اپنے بیان میں تصدیق کی ہے کہ کرم ایجنسی کے علاقے شیبک میں پاکستان افغان سرحد کے قریب ہونے والے امریکی ڈرون حملے میں طالبان کمانڈر خاورے محسود اور دیگر 2 ارکان ہلاک ہوگئے۔ خاورے محسود کا تعلق جنوبی وزیرستان  ایجنسی کی  تحصیل سراروغہ سے تھا، وہ کالعدم تحریک طالبان کے سابق براہ حکیم اللہ محسود کا انتہائی قریبی اور اس کا ذاتی محافظ تھا۔ تحریک طالبان کے ترجمان کا کہنا ہے کہ خاورے محسود 18مارچ کو کرم ایجنسی کے علاقے شیبک میں اپنے دیگر دو ساتھیوں صالح محمد داور، الیاس تالورا اور طارق داور الیاس عمر کے ساتھ مارا گیا۔ صالح محمد داور الیاس تالورا کا تعلق جنوبی وزیرستان کے علاقے تاپائی جبکہ طارق داور الیاس کا تعلق ہمزوری گائوں سے تھا۔ بی بی سی کے مطابق امریکی ڈرون حملہ ایسے وقت کیا گیا جب افغان طالبان اور افغان حکومت کے درمیان بات چیت شروع ہونے کے بارے میں اطلاعات سامنے آ رہی ہیں۔