چشمہ لنک کینال پر بجلی گھر کے منصوبے کیخلاف سندھ میں ہڑتال‘ احتجاجی ریلیاں

کراچی (نامہ نگاران) چشمہ جہلم لنک کینال پر پنجاب حکومت کی جانب سے بجلی گھر تعمیر کرنے کے فیصلے کیخلاف عوامی تحریک کی اپیل پر کراچی سمیت سندھ کے کئی اضلاع میں شٹر ڈاﺅن ہڑتال کی گئی اور ریلیاں نکالی گئیں۔ مظاہرین نے ٹائر جلا کر اندرون سندھ قومی شاہراہ بلاک کر دی جبکہ اس دوران مظاہرین نے متعدد گاڑیوں پر پتھراﺅ کیا اور ایک ٹریکٹر ٹرالی نذر آتش کر دی۔ نامہ نگاران کے مطابق بدین‘ کراچی‘ جامشورو‘ ٹھٹھہ‘ میرپور خاص سمیت دیگر شہروں میں ہڑتال کے باعث کاروبار زندگی معطل ہو کر رہ گیا جبکہ ٹرانسپورٹ کی بندش سے عوام کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ سندھ کی بعض قومیت پرست جماعتوں نے بھی ہڑتال کی حمایت کی اس موقع پر مظاہرین نے کہا کہ بجلی گھر کی تعمیر سے سندھ میں پانی کی قلت میں اضافہ ہو گا۔ سندھ نیشنل پارٹی کے چیئرمین امیر بھنبھرو نے کہا ہے کہ پنجاب کا بھائی چارہ صرف سندھ کے وسائل اور پانی پر قبضہ کرنے تک ہی محدود ہوتا ہے۔ دوسری جانب وزیراعلی سندھ کے مشیر جمیل سومرو نے کہا ہے کہ چشمہ جہلم لنک کینال منصوبے پر سندھ اسمبلی نے متفقہ قرارداد منظور کی ہے۔ مسئلہ بات چیت کے ذریعے حل کرینگے۔ کراچی میں عوامی تحریک کی ہڑتال موثر نہیں ہوئی۔