پاکستان خطے کا مہنگا ترین ملک ہے‘ حکومتی قرضوں نے افراط زر کو کنٹرول سے باہر کر دیا: اقوام متحدہ

پاکستان خطے کا مہنگا ترین ملک ہے‘ حکومتی قرضوں نے افراط زر کو کنٹرول سے باہر کر دیا: اقوام متحدہ

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ) اقوام متحدہ نے معاشی و معاشرتی ترقیاتی رپورٹ برائے ایشیا جاری کر دی گئی۔ سابق مشیر خزانہ ڈاکٹر اشفاق حسن خان نے رپورٹ جاری کی۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مہنگائی کی شرح خطے کے ممالک میں پاکستان میں سب سے زیادہ ہے۔ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کی وجہ سے افراط زر میں اضافہ ہوا۔ 2012ءمیں پاکستان کی اقتصادی شرح نمو 3.7 فیصد رہی۔ زرعی شعبے میں 2011ءکی نسبت 2012ءمیں بہتری دیکھنے میں آئی۔ 2012ءمیں غیر ملکی سرمایہ کاری معیشت کا 12.5 فیصد رہی۔ غیر ملکی سرمایہ کاری 2011ءکے مقابلے میں 0.6 فیصد کم ہوئی۔ توانائی بحران اور خراب مالی صورتحال کے باعث ترقی نہ ہو سکی، 2013ءمیں پاکستان کی اقتصادی شرح نمو 3.5 فیصد رہے گی۔ سٹیٹ بنک سے حکومتی قرضوں کے باعث افراط زر کنٹرول سے باہر ہوا۔ ڈاکٹر اشفاق حسن کا کہنا ہے رواں مالی سال میں پاکستان کا مالیاتی خسارہ 8.5 فیصد سے بھی بڑھ جائے گا۔ نئی حکومت کے لئے ملکی اقتصادی صورتحال بہتر کرنا سب سے بڑا چیلنج ہو گا۔ مالی بدنظمی اور کرپشن کی وجہ سے غیر ملکی سرمایہ کاری ملک میں نہ آ سکی۔