اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کیلئے آرڈیننس تیار‘ 2 روز میں وزارت قانون کو بھجوایا جائیگا: الیکشن کمشن

اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کیلئے آرڈیننس تیار‘ 2 روز میں وزارت قانون کو بھجوایا جائیگا: الیکشن کمشن

اسلام آباد (خبرنگار+نوائے وقت رپورٹ) گزشتہ روز چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) فخر الدین جی ابراہیم کی صدارت میں الیکشن کمشن کا اجلاس ہوا۔ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو میں سیکرٹری الیکشن کمشن نے بتایا آرڈیننس دو روز میں وزارت قانون کو بھجوا دیا جائیگا۔ خبرنگار کے مطابق سےکرٹری اشتےاق احمد نے بتاےا کمےشن نے 25 اپرےل کو وفاق اور صوبوں کا اہم اجلاس اسلام آباد مےں طلب کیا ہے، صوبوں سے کہا گےا ہے وہ اپنا سکےورٹی پلان پےش کرےں تاکہ جہاں ضروری ہو وہاں فوج تعےناتی کی منظوری دی جاسکے۔الےکشن کمےشن نے تمام سےاسی قائدےن اور امےدواروں کی فول پروف سےکورٹی ےقےنی بنانے کے لئے صوبوں کو ہدایت جاری کردی ہےں۔ چےف الےکشن کمشنر کے زیر صدارت اجلاس مےں آمدہ انتخابات کے حوالے سے سکےورٹی اور دےگر معاملات کا جائزہ لےا گےا، سیکرٹری نے کہا آئندہ انتخابات مےں کوئی چےز رکاوٹ نہےں بن سکتی اور انتخابات شفاف،غےر جانبدارانہ اور بروقت ہونگے۔ سمندر پار پاکستانےوں کے ووٹ بارے مےں آرڈےنس کی سمری کمےشن نے تےار کرلی ہے جسے دو روز مےں وزارت قانون کو بھجوا دےا جائے گا جوآرڈےنس کے اجرا اور منظوری کے لئے صدر کو بھجوائے گی،سےکرٹری نے کہا عام انتخابات مےں 88 فےصد کا ٹارگٹ مقرر کےا گےا ہے مگر الےکشن کمےشن کی خواہش ہے کہ ٹرن آوٹ 100فےصد ہو۔انہوں نے کہا 18کروڑ بےلٹ پےپرز کی چھپائی کا کام آج 19اپرےل سے شروع کردےا جائے گا جو 30 اپرےل تک مکمل ہوجائے گا تاہم کراچی کے گےارہ حلقوں کے بےلٹ پےپرز کی چھپائی 22 اپرےل تک زےر التوا رہے گی اور 22کے بعد انکی چھپائی کے بارے میں بھی صورت حال واضح ہوجائے گی۔ڈےرہ بگٹی کے 2 لاکھ آئی ڈی پےزکے بارے میں سوال کے جواب مےں انہوں نے کہا نادرا نے انکی تصدےق نہےں کی تاہم 60 ہزار بگٹی مستقل پتوں پر موجود ہےں اور 9 ہزار بگٹی مستقل پتوں پر نہےں جبکہ کے پی کے کے آئی ڈی پےز کے حوالے سے پولےٹےکل اےجنٹس فےصلہ کرےں گے ان کے پولنگ سٹےشن کہاں کہاں قائم کےے جائےں۔سےنٹ کی انتخابات کے بارے میں خصوصی کمےٹی کے خط کے جواب مےں کمےشن نے کہا کمےشن کو آئےنی اختےارات حاصل ہےں اور صاف شفاف انتخابات کے لئے کمےشن ہر ممکن اقدامات کرے گا۔نوائے وقت نیوز، ثناءنیوز کے مطابق اجلاس میں چیف الیکشن کمشنر نے ہدایت کی سیاسی قائدین اور امیدواروں کو سکیورٹی فراہم کی جائے۔ صوبائی حکومتیں انتخابی امیدواروں کی سکیورٹی یقینی بنائیں۔ انہں نے کہا امن و امان یقینی بنانا صوبائی حکومتوں کی ذمہ داری ہے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سیکرٹری نے کہا الیکشن کمشن نے انتخابی عمل کی نگرانی سے متعلق سینٹ کی خصوصی کمیٹی کا مطالبہ مسترد کردیا۔ سیکرٹری الیکشن کمشن نے کہا الیکشن کمشن کو مکمل آئینی اختیارات حاصل ہیں۔ سیاسی جماعتوں کے انتخابی اخراجات کی کوئی حد مقرر نہیں۔ دریں اثناءسیکرٹری الیکشن کمشن نے ایک انٹرویو میں کہا جلد ہی صوبائی حکومتوں کے ساتھ ایک اجلاس منعقد کیا جائے گا جس میں عام انتخابات کیلئے سکیورٹی منصوبہ مرتب کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا گڑ بڑ والے علاقوں میں سیاسی لیڈروں کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے فوج، رینجرز اور مقامی پولیس کو ہدایت جاری کی جا چکی ہیں۔ انہوں نے بتایا مقررہ وقت پر اور آزادانہ اور منصفانہ طریقے سے انتخابات کرائے جائینگے اور سکیورٹی کی صورتحال کو پولنگ کی راہ میں رکاوٹ نہیں بننے دیا جائے گا۔