صدر زرداری کو مشورہ دیا ہے کہ ریلوے کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتے تو اسے بند کر دیں. وفاقی وزیر ریلوے غلام احمد بلور

صدر زرداری کو مشورہ دیا ہے کہ ریلوے کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتے تو اسے بند کر دیں.  وفاقی وزیر ریلوے غلام احمد بلور

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے غلام احمد بلور کا کہنا تھا کہ ریلوے کے سالانہ باون ارب روپے کے اخراجات ہیں، دو سال سے انجنوں کی خریداری کیلئے وفاقی حکومت سے پیسے مانگ رہے ہیں ، چھ اعشاریہ ایک ارب روپے وفاقی کابینہ سے طلب کئے جو نہیں ملے ،انکا کہنا تھا کہ حکومت کی عدم توجہ کی وجہ سے ریلوے سٹیٹ بینک کے چالیس ارب روپے کا مقروض ہے۔حکومت کی جانب سے پہلے پیسے ادا کر دیئے جاتے تو تنخواہیں ادا ہو جاتیں، اب حکومت نے کچھ پیسے دیئے ہیں تو کل سے ریلوے ملازمین کی تنخواہیں اور پینشن ملنا شروع ہو جائیں گی۔غلام بلور کا کہنا تھا کہ ریلوے کی ترقی کیلئے پرائیویٹ سیکٹر کو دعوت دی جا رہی ہے۔ شیخ رشید کو ریلوے چلانے کا اتنا ہی شوق ہے تو پہلے الیکشن جیتیں۔غلام بلور نے خود کو ریلوے کی بدحالی سے مستثنی قراردیتے ہوئے کہا کہ زرداری کو ہزار بار استعفے کی پیشکش کی لیکن انہوںنے استعفی منظور نہیں کیا۔