آپریشن پر خیبر پی کے حکومت کو اعتماد میں لیا گیا، کوشش ہو گی جلد مکمل ہو جائے: سردار مہتاب

آپریشن پر خیبر پی کے حکومت کو اعتماد میں لیا گیا، کوشش ہو گی جلد مکمل ہو جائے: سردار مہتاب

پشاور (این این آئی) گورنر خیبر پی کے سردار مہتاب احمد خان نے کہاکہ شمالی وزیرستان میں ہونیوالے آپریشن پر صوبائی حکومت کو اعتماد میں لیا گیا ہے۔ آپریشن کا مقصد ملکی اور غیرملکی دہشت گردوں کو ٹارگٹ کرنا ہے۔ افغانستان، شمالی وزیرستان متاثرین کیلئے پیکیج کا اعلانات نہ کرے کوشش ہو گی کہ آپریشن جلد مکمل ہو جائے اور قبائلی علاقوں میں امن قائم ہو جائے۔ قبائلی علاقوں میں امن کے قیام کے بارے میں سیاسی اور عسکری قیادت کے مابین کسی قسم کا اختلاف نہیں۔ گورنر ہائوس پشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے گورنر سردار مہتاب احمد خان کا کہنا تھا کہ شدید دبائو اور تنقید کے باوجود وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں موجودہ حکومت نے قیام امن کے لئے نہایت خلوص اور سنجیدگی سے مذاکرات کو ایک موقع دینے کی کوشش کی۔ اس مقصد کے لئے پہلے آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کر کے ملک کی تمام سیاسی اور عسکری قیادت کو ایک صفحہ پر لایا گیا۔ مذاکراتی عمل" اور "جنگ بندی"کے جواب میں دہشت گردی اور سکیورٹی اہلکاروں اور سرکاری تنصیبات پر حملوں کی وارداتوں کے ایک نئے سلسلہ کا آغاز کیا گیا تاہم ڈرون حملوں کا سلسلہ بھی مکمل طور پر رکا ہوا تھا اس کے باوجود دہشت گردی کے واقعات ہیں۔مقامی اور غیرملکی دہشت گردوں کی جانب سے اس کھلم کھلا جارحیت کے بعد یہ واضح کرنا ضروری ہوچکا تھاکہ تمام اندرونی اور بیرونی دہشت گردوں اور شرپسندوں کو یہ سبق سکھایا جائے۔ امن کے قیام کی ہماری خواہش کو ہماری کمزوری نہ سمجھا جائے ہماری بہادر افواج دنیا کی بہترین عسکری قوت ہے جو اپنی جرأت، دلیری اور بہادری کا لوہا منوا چکی ہیں۔ اس آپریشن کا مقصد اور ہدف شمالی وزیرستان ایجنسی کو ہر قسم کے اندرونی اور بیرونی دہشت گردوں سے پاک کرنا ہے۔ وزیراعظم نے خصوصی طور پر ہدایت کی ہے اس آپریشن میں کسی قسم کا  سویلین جانی نقصان نہ ہو۔ شمالی وزیرستان کے بچے، بوڑھے، خواتین اور عوام پاکستان کی سالمیت اور تحفظ کے لئے گھر بار چھوڑ رہے ہیں ان کی مدد اور تعاون کے لئے وسائل کی کمی آڑے نہیں آئے گی۔
گورنر خیبر پی کے