ملک بھر میں کوہنگ آپریشن تیز، 100 سے زائد دہشتگرد ہلاک، سینکڑوں گرفتار؛ دشمن کا ایجنڈا کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دینگے: آرمی چیف

خبریں ماخذ  |  ویب ڈیسک
ملک بھر میں کوہنگ آپریشن تیز،  100 سے زائد دہشتگرد ہلاک، سینکڑوں گرفتار؛ دشمن کا ایجنڈا کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دینگے: آرمی چیف

ملک میں دہشت گردی کی حالیہ لہر کے بعد سکیورٹی فورسز نے تخریب کاروں کے خلاف کارروائیاں تیز کردیں، چند گھنٹوں کے دوران 100 سے زائد دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق پنجاب سمیت ملک کے مختلف شہروں میں انٹیلی جنس اطلاعات پر آپریشنز کئے گئے۔ آرمی چیف کا کہنا ہے کہ دشمن کا ایجنڈا کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دیں گے جبکہ کئی مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا گیا۔ کراچی کے علاقے منگھو پیر اور سپر ہائی وے پر رینجرز کی کارروائیوں کے دوران 18 دہشت گرد مارے گئے۔ دہشت گردوں کی فائرنگ سے رینجرز کے تین اہلکار زخمی ہوئے۔ بھاری تعداد میں آٹومیٹک ہتھیار دستی بم اور دھماکہ خیز مواد برآمد کرلیا گیا۔ مارے جانے والے دہشت گردوں کا تعلق کالعدم تحریک طالبان کالعدم لشکر جھنگوی، جماعت الاحرار اور دیگر جہادی تنظیموں سے تھا۔ رینجرز ذرائع کے مطابق لعل شہباز قلندر کے مزار پر دھماکے کے بعد امدادی کارروائیوں میں حصہ لینے والے رینجرز اہلکار 5 گاڑیوں کے قافلے کی شکل میں واپس کراچی آرہے تھے کہ سپر ہائی وے پر کاٹھور کے نزدیک دہشت گردوں نے حملہ کیا جس کے نتیجے میں ایک رینجرز اہلکار زخمی ہوا۔ جوابی کارروائی میں 7 دہشت گرد ہلاک ہوگئے۔ اس کے علاوہ ادھر کراچی کے علاقے منگھو پیر مائی گاڑھی میں رینجرز نے دہشت گردوں کے ایک ٹھکانے پر چھاپہ مارا جہاں مقابلے کے دوران گیارہ دہشت گرد ہلاک اور رینجرز کے دو اہلکار زخمی ہوئے اور وہاں سے بھی بھاری تعداد میں اسلحہ برآمد کیا گیا جس میں دستی بم اور دھماکہ خیز مواد شامل ہے۔ رینجرز ذرائع سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق ہلاک دہشت گردوں میں جماعت الاحرار کراچی کے امیر نوشاد خان عرف لالہ یونس عرف شمس ماما کے علاوہ کالعدم لشکر جھنگوی کراچی کا امیر ملک تصدق بھی شامل ہے۔ ملک تصدق خطرناک دہشت گردوں آصف چھوٹو، آصف رمزی اور نعیم بخاری کا قریبی ساتھی بتایا جاتا ہے اور طویل عرصے سے عبادت گاہوں اور سکیورٹی فورسز پر حملوں میں ملوث تھا۔ ملک تصدق کے سر کی قیمت پانچ لاکھ روپے مقرر تھی۔ اس نے افغانستان میں ایک ماہ کی عسکری ٹریننگ حاصل کی تھی۔ وہ غیر ملکی صحافی ڈینئیل پرل کے قتل میں بھی ملوث تھا۔ دہشت گرد نوشاد خان قتل‘ اقدام قتل‘ اغوا برائے تاوان اور اسلحہ کی ترسیل میں ملوث تھا جبکہ افغانستان میں موجود دہشت گردوں سے اس کے روابط تھے۔ ترجمان نے بتایا ابھی تک جن دیگر دہشت گردوں کی شناخت ہوئی ان میں شیراز احمد بم بنانے اور بارودی سرنگیں لگانے کا ماہر تھا۔ عزیز اللہ جس کا تعلق کالعدم تحریک طالبان سے تھا بیت اللہ محسود کا قریبی ساتھی اور فوجی قافلوں پر حملوں اور فوجی جوانوں کو ذبح کرنے میں ملوث تھا۔ اورکزئی ایجنسی کے علاقہ غلوچینہ میں سکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان جھڑپ میں 6 دہشت گرد ہلاک ہوگئے جبکہ پشاور کے علاقے ریگی میں سرچ آپریشن کے دوران دہشت گردوں نے فورسز پر حملہ کیا۔ جوابی کارروائی میں 3 دہشت گرد ہلاک ہو گئے۔ بنوں میں بھی تھانہ بکاخیل کے علاقے مروت کینال کے میں سکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں 4 دہشت گرد ہلاک ہوئے۔ بھاری اسلحہ اور افغانی و عراقی کرنسی بھی برآمد ہوئی۔ گزشتہ روز ڈیرہ اسماعیل خان میں پولیس موبائل پر فائرنگ کرنے والے 2 دہشت گرد ناکے پر فورسز کی فائرنگ سے ہلاک اور ایک زخمی ہوگیا جسے اس کے ساتھی ہمراہ لے گئے۔ لاہور میں فیصل آباد بائی پاس کے قریب ریڈ کے دوران دہشت گردوں نے سکیورٹی اہلکاروں پر فائرنگ کر دی، جوابی کارروائی میں 2 دہشتگرد ہلاک ہوگئے۔ سرگودھا میں کاﺅنٹر ٹیررزم ڈیپارٹمنٹ نے کارروائی کر کے 2 دہشت گردوں کو ہلاک ان کے قبضے سے بھاری تعداد میں اسلحہ برآمد کرلیا۔ کوئٹہ میں ایف سی اور پولیس نے دہشت گردوں کے کمپاو¿نڈ پر چھاپہ مارا تو دہشت گردوں نے ان پر فائر کھول دیا جس کے نتیجے میں 2 ایف سی اہلکار زخمی ہوگئے۔ جوابی کارروائی میں 2 دہشت گرد ہلاک ہوگئے، کمپاو¿نڈ سے بڑی مقدار میں اسلحہ و بارود بھی قبضے میں لے لیا گیا۔ دیر بالا کے علاقے شنگاڑہ درہ میں سکیورٹی فورسز سے جھڑپ میں دو دہشت گرد ہلاک ہوئے۔ کوئٹہ میں ایک اور کارروائی کے دوران کالعدم تحریک طالبان کے 2 دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا گیا۔ خیبر ایجنسی میں سکیورٹی فورسز نے بمباری کرکے پاک افغان سرحدی علاقے لوئے سلمان میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔ 6 دہشت گرد ہلاک ہوئے جبکہ 10 ٹھکانے تباہ ہوگئے۔ لاہور میں بھی پولیس نے مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کے دوران تیس سے زائد مشتبہ افراد کو گرفتار کرلیا۔ ڈی آئی جی آپریشنز لاہور کے مطابق زیرحراست افراد میں افغان اور فاٹا کے باشندے بھی شامل ہیں۔ چنیوٹ میں بھی پولیس نے ضلع کے مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کیا، آپریشن میں 174 مشکوک افراد کی بائیومیٹرک ڈیوائس سے تلاشی لی گئی، نیشنل ایکشن پلان کی خلاف ورزی پر پانچ ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے اسلام آباد کے گردونواح میں سرچ آپریشن کرکے 10افغانیوں سمیت 42افراد کو حراست میں لے کر اسلحہ برآمد کرلیا۔ حالیہ دہشتگردی کی وارداتوں کے بعد ملک بھر کی جیلوں میں بند کالعدم تنظیموں، دہشتگردوں کے سہولت کاروں کیساتھ ساتھ دہشتگردوں سے پوچھ گچھ کا سلسلہ شروع کردیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اس پوچھ گچھ کے نتیجہ میں پولیس اور قانون نافذ کرنیوالے اداروں کو اہم شواہد ملے جس کی روشنی میں آپریشن کیا گیا۔ کور کمانڈر راولپنڈی کی زیر صدارت قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اعلیٰ حکام کی کانفرنس ہوئی۔ دہشت گردی کے خطرے سے نمٹنے کے طریقہ کار کا جائزہ لیا گیا۔ سکیورٹی فورسز، انٹیلی جنس اداروں کو کومبنگ اور ٹارگٹڈ آپریشن تیز کرنے کی ہدایت کی گئی۔ سکیورٹی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ دہشت گردوں اور ان کے سلیپرز سیل کے خاتمے کی ہدایات جاری کی گئیں۔ دریں اثناءآرمی چیف نے کہا ہے کہ پاک فوج ہر قسم کے خطرے کے خلاف پاکستانی عوام کی سکیورٹی کیلئے ہے، پوری قوم کو اپنی مسلح افواج کے ساتھ اعتماد کے ساتھ ثابت قدم رہنا ہے، ہم ملک دشمن ایجنڈا کسی بھی قیمت پر کامیاب نہیں ہونے دیں گے، قوم کو فورسز پر مکمل اعتماد اور انحصار کرنا چاہئے۔ بھکر سے نامہ نگار کے مطابق سرچ آپریشن کے دوران 15 مشکوک افراد کو حراست میں لے لیا گیا۔ سیالکوٹ سے نامہ نگار کے مطابق اڑھائی ہزار سے زائد پولیس اہلکاروں کو الرٹ کردیا گیا اور سرچ آپریشن کے دوران 50 سے زائد مشکوک افراد جن میں 40 افغانی شامل ہیں کو حراست میں لے لیا گیا۔ پولیس نے گشت وناکہ بندی کرکے مشکوک افراد کی تلاشی لی جارہی ہے اور امام بارگاہوں اور بزرگان دین کے مزارات، لاری اڈوں اور اہم پبلک مقامات پر پولیس اہلکار تعینات ہیں۔ منکیرہ سے نامہ نگار کے مطابق مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کے دوران 3 افغانیوں سمیت 12 مشتبہ افراد گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا گیا۔ چیچہ وطنی سے نامہ نگار کے مطابق پاک فوج کے جوانوں نے پولیس تھانہ سٹی کے ہمراہ شہر کا گشت کیا۔ کوئٹہ میں مارے گئے دہشت گردوں میں مولوی عبدالغفور اور جان محمد محسود شامل ہیں۔