کسی وقتی لہر کا حصہ نہیں بنیں گے‘ حکومت کرپشن ختم کرتی تو یہ نوبت نہ آتی : نوازشریف

لاہور (خصوصی رپورٹر + وقت نیوز + اے این این) مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف نے کہا ہے مسلم لیگ (ن) کسی وقتی لہر کا حصہ نہیں بنے گی‘ حکومت کرپشن کا خاتمہ کرتی تو وزرا کو برطرف یا اتحادیوں کو ناراض کرنے کی نوبت ہی نہ آتی‘ آج عدالتی حکم پر کرپشن کی رقم واپس ہو رہی ہے۔ وقت نے ثابت کر دیا کہ عدلیہ کی بحالی احسن اقدام تھا‘ ایوان صدر میں چینی وزیراعظم کی عزت کے لئے جاں گا‘ سائیڈ لائن پر صدر آصف زرداری سے کسی بات چیت کا امکان نہیں‘ حکومت کی کارکردگی تسلی بخش نہیں‘ پنجاب میں گیس کی بندش سے صوبائی حکومت ہی نہیں وفاق کو بھی نقصان ہو گا‘ ایسی نوبت ہی نہیں آنی چاہئے کہ کوئی صوبہ یہ کہنے پر مجبور ہو کہ ہمارے خلاف سازش ہو رہی ہے۔ وہ گذشتہ روز مسلم لیگی کارکن توفیق بٹ کی رہائش گاہ پر ان کے والد کی وفات پر اظہار تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ نوازشریف نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے درمیان اختلاف اُن دونوں جماعتوں کے درمیان معاملہ ہے‘ مسلم لیگ (ن) کا اُس سے کوئی تعلق نہیں اور نہ یہ مسلم لیگ (ن) کسی وقتی لہر کے تحت فیصلے کرتی ہے۔ پاکستان اور عوام کے مفادات کے خلاف فیصلوں کی ہم نے نہ پہلے کبھی حمایت کی ہے اور نہ ہی آئندہ کریں گے۔ اے این این کے مطابق نوازشریف نے واضح کیا کہ مسلم لیگ (ن) کسی وقتی لہر کا حصہ نہیں بنے گی، فیصلے دوسروں کی موومنٹ دیکھ کر نہیں اپنے نظریات کے مطابق کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال خوش آئند نہیں ہے تاہم مسلم لیگ (ن) کسی وقتی لہر کے ساتھ بہہ جانے والی نہیں ہے‘ انہوں نے کہاکہ میں نے ملک کو درپیش مسائل اور چیلنجز کے حل کیلئے صدر آصف علی زرداری کو خط لکھا تھا اس کا ابھی تک کوئی خاطر خواہ جواب نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر میرے خط کے مطابق ایجنڈے پر عمل کیا جائے تو حالات اب بھی سنبھل سکتے ہیں۔ حکومت سمیت اب سب کو اپنا قبلہ درست کر لینا چاہئے‘ بجلی کے بعد اب گیس کی لوڈ شیڈنگ سے ملک تباہی کی طرف جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے کبھی اصولوں پر سمجھوتہ کیا نہ کریں گے اگر حکومت کرپشن ختم کرنے میں سنجیدہ ہے تو این آر او زدہ سمیت کرپٹ وزرا سے استعفیٰ لے کر اپنی ساکھ بحال کرے۔ صدر زرداری سمیت وزیراعظم سے کئی ملاقاتیں کیں مگر افسوس حکومت سمیت صدر نے اس معاملے کا کوئی نوٹس نہیں لیا۔ ہم وزیراعظم سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ شہباز شریف کی اپیل کا نوٹس لیں اور پنجاب سے ہونے والی زیادتی کا ازالہ کریں۔ صدر زرداری اور وزیراعظم نے ہمیں بہت مایوس کیا ہے۔ دریں اثناءنوازشریف نے ےوم عاشور کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ حضرت امام حسین رضی اللہ تعالی عنہ نے جس طرح کربلا کے میدان میں اپنے عالی مرتبت ساتھیوں سمیت حق کی سربلندی کےلئے اپنی جان کا نذرانہ پیش کیا۔ ہم سب کےلئے مینارہ نور کی حیثیت رکھتا ہے۔ آج ہمیں جتنے بھی چیلنجز درپیش ہیں۔ ان سے عہدہ برآ ہونے کےلئے ہمیں بحیثیت قوم ےکجا ہو کر اسوہ حسینی کو اپنا شعار بنانا ہو گا۔ نوازشریف نے امریکی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن کے نام اپنے تعزیتی خط میں رچرڈ ہالبروک کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ دریں اثناءنوازشریف متحدہ عرب امارات میں پاکستان کے نمائندے چودھری منیر کی رہائش گاہ پر گئے اور ان سے ان کے والد کی وفات پر تعزیت کی۔