پشاور : ماتمی جلوس کے اختتام پر دستی بم سے حملہ‘ ایک بچہ جاں بحق

پشاور + شیخوپورہ (وقت نیوز + ریڈیو مانیٹرنگ + نامہ نگار خصوصی) پشاو میں ماتمی جلوس کے اختتام پر دستی بم سے حملے میں ایک بچہ جاں بحق اور 26 افراد زخمی ہو گئے۔ بہاولپور میں 2 گروپوں کے درمیان تصادم ہو گیا جس پر پولیس نے ہوائی فائرنگ اور شیلنگ کی جس سے 20 افراد زخمی ہو گئے۔ شیخوپورہ میں دو گروپوں کے درمیان فائرنگ‘ سیالکوٹ میں تصادم سے متعدد افراد زخمی ہو گئے۔ کوئٹہ میں جلوس سے خودکش بمبار کو گرفتار کر لیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق پشاور کے یادگار چوک کے قریب نامعلوم افراد نے خواتین عزاداروں اس وقت دستی بم پھینک دیا جب وہ جلوس کے اختتام پر اپنے اپنے گھروں کو جا رہی تھیں۔ دھماکہ معمولی نوعیت کا تھا تاہم اس دھماکے میں زخمی ہونے والا بچہ ہسپتال میں جاں بحق ہوگیا۔ سینئر وزیر بشیر احمد بلور نے ہسپتال میں زخمیوں کی عیادت کی۔ امام بارگاہ کلاں شیخوپورہ کے باہر چند افراد ماتم کر رہے تھے کہ اس دوران دوسرا گروپ بھی آ گیا پرائیویٹ گارڈز نے انکی تلاشی لینے کی کوشش کی جس پر جھگڑاہو گیا۔ فائرنگ کے تبادلے میں ایک شخص زخمی ہو گیا جبکہ کوئٹہ میں حساس اداروں کے اہلکاروں نے جلوس سے خودکش بمبار کو گرفتار کرکے اس کی خودکش جیکٹ اتار لی اور اسلحہ پکڑ لیا‘ خودکش بمبار جلوس کیساتھ جیمر کی وجہ سے خود کو نہ اڑا سکا۔ بہاولپور کے علاقہ مبارک پور میں جلوس واپس آ رہا تھا تو پل فاروق آباد پر دونوں اطراف سے نعرہ بازی میں تصادم ہو گیا دونوں طرف سے پتھراﺅ کے نتیجے میں 20 افراد زخمی ہو گئے جن میں متعدد کی حالت تشویشناک ہے۔ پولیس نے حالات کنٹرول کرنے کیلئے ہوائی فائرنگ اور آنسو گیس کا استعمال کیا۔ فیصل آباد میں ایک شخص نے جلوس میں زبردستی داخل ہونے کی کوشش کی کانسٹیبل کے روکنے پر مشکوک شخص نے چاقو سے حملہ کرکے اہلکار کو زخمی کر دیا۔ پولیس کی فائرنگ سے مشتبہ شخص بھی زخمی ہو گیا۔ علاوہ ازیں سیالکوٹ میں ماتمی جلوس جب امام بارگاہ سے باہر نکلا تو درجنوں افراد نے ماتمی جلوس پر حملہ کر دیا اور پتھراﺅ کیا تاہم موقع پر پولیس نے حالات کو مذاکرات کے بعد کنٹرول کر لیا۔