پاکستان کو چیلنجز درپیش ہیں‘ سیاستدان ذاتی مفادات چھوڑ کر ملک کیلئے سوچیں : شاہ محمود قریشی

ملتان (ریڈیونیوز + وقت نیوز + اے این این) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے جے یو آئی (ف) کے ساتھ بیٹھنے کی گنجائش موجود ہے‘ مولانا فضل الرحمن کو منا لینگے۔ سیاست میں کوئی بات حرف آخر نہیں ہوتی۔ قومی رہنمائی کیلئے مغربی اور مشرقی سرحدوں کی صورتحال کو سمجھنا ہو گا ایک طبقہ ملک کا شیرازہ بکھیرنا چاہتا ہے۔ یہاں حسینیہ کانفرنس سے خطاب اور صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا پاکستان اس وقت حالت جنگ میں ہے ہمیں اندرونی و بیرونی چیلنجز کو مدنظر رکھتے ہوئے گروہ بندی اور فرقہ بندی سے بالاتر ہو کر ملک کیلئے سوچنا ہو گا۔ سیاست دان ذاتی مفادات سے بالاتر ہو کر پاکستان کیلئے سوچیں۔ انہوں نے کہا مرکزی حکومت کو کوئی خطرہ نہیں۔ موجودہ حکومت نے اڑھائی سال میں کسی کو سیاسی انتقام کا نشانہ نہیں بنایا۔ ریڈیو نیوز‘ وقت نیوز کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا پاکستان کو اندرونی و بیرونی چیلنجز کا سامنا ہے سیاستدانوں کو ذاتی مفاد کو چھوڑ کر ملکی مفاد کیلئے سوچنا ہو گا۔ انہوں نے کہا متحدہ کے قائد الطاف حسین کی جانب سے حکومت کو الیکشن کی کال دینا کوئی انہونی بات نہیں‘ سیاسی جماعتیں الیکشن کی تیاریوں میں ہر وقت مصروف رہتی ہیں۔ اے این این کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سے صحافیوں نے جب سانحہ سقوط ڈھاکہ کے حوالے سے سوال کیا تو انہوں نے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ آج اور کل حسین کا دن ہے لہذا کوئی سیاسی بات نہ کی جائے۔ انہوں نے قوم سے اپیل کی کہ وہ دعا کریں یوم عاشور خیریت سے گزر جائے۔