بلدیاتی انتخابات الیکشن کمشن کے تحت مقررہ وقت پر کرائے جائیں: تحریک انصاف کی اے پی سی

لاہور (خبر نگار) بلدیاتی انتخابات الیکشن کمشن کے زیر اہتمام مقررہ وقت پر کروائے جائیں، بلدیاتی اداروں میں ایڈمنسٹریٹرز کی تعیناتی کسی صور ت برداشت نہیں کی جائے گی، صوبائی حکومت موجودہ نظام کی خامیوں کو دور کر نے کے لئے کمیٹی تشکیل دے جس میں تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندوں اور بلدیاتی اداروں کا تجربہ رکھنے والے افراد کو شامل کیا جائے۔ یہ مطالبات گذشتہ روز پاکستان تحریک انصاف کے زیر اہتمام منعقدہ آل پارٹیز کانفرنس کے مشترکہ اعلامیہ میں کئے گئے۔ اے پی سی کا مسلم لیگ (ن) نے بائیکاٹ کیا۔ گذشتہ روز تحریک انصاف لاہور کے صدر میاں محمود الرشید کی زیر صدارت مقامی ہوٹل میں منعقدہ اے پی سی میں ضلع ناظم لاہور میاں عامر محمود‘ نائب ناظم ادریس حنیف‘ پیپلز پارٹی لاہور کے صدر چودھری اصغر گجر‘ جنرل سیکرٹری اکبر خان‘ مسلم لیگ (ق) لاہور کے صدر میاں منیر‘ جماعت اسلامی لاہور کے امیر امیرالعظیم‘ جے یو پی نفاذ شریعت کے انجینئر سلیم اللہ‘ جے یو پی (نورانی) کے ملک بشیر‘ خاکسار تحریک لاہور کے صدر رانا ایوب‘ تحریک استقلال (وردگ گروپ) کے شہباز حیدر‘ پاکستان عوامی تحریک لاہور کے صدر چودھری افضل، سنی تحریک کے محمد صدیق‘ عوامی مسلم لیگ لاہور کے صدر میاں قدیر احمد‘ اے این پی لاہور کے جنرل سیکرٹری سید ذیشان تیمور گیلانی و دیگر نے شرکت کی۔ اے پی سی کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس میں رہنماؤں نے اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ بلدیاتی اداروں کے انتخابات میں ایک سال کی تاخیر اور ایڈمنسٹریٹر زکی تعیناتی کو مسترد کرتے ہیں۔ حکومت بلدیاتی انتخابات فوری طور پر کروائے اور بلدیاتی نظام کو مکمل طور پر صوبائی حکومت کے اختیار میں دیا جائے تاکہ صوبوں کو زیادہ سے زیادہ اختیارات مل سکیں۔ انہوں نے کہا کہ منتخب قیادت کی بجائے ڈی ایم جی ایڈمنسٹریٹرز کا تقرر کرنا جمہوریت کی نفی ہے۔ اس لئے آئندہ بلدیاتی انتخابات تک موجودہ نظام کو ہی کام کرنے دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریٹرز کو مجسٹریٹی کے اختیارات دینا آئین کے خلاف اور عدلیہ کی انتظامیہ سے علیٰحدگی کے خلاف ہے۔