فوجی عدالتوں کا فیصلہ غیرمعمولی حالات میں آخری اقدام کے طور پر کیا‘ عدلیہ کی آزادی کا احترام کرتے ہیں: نوازشریف

فوجی عدالتوں کا فیصلہ غیرمعمولی حالات میں آخری اقدام کے طور پر کیا‘ عدلیہ کی آزادی کا احترام کرتے ہیں: نوازشریف

اسلام آباد + ریاض  + طائف (نوائے وقت رپورٹ + نمائندہ خصوصی + ممتاز احمد  بڈانی)  وزیراعظم نواز شریف نے ایک بیان میں  کہا ہے کہ فوجی عدالتوں کے قیام کا فیصلہ غیر معمولی  حالات میں آخری اقدام کے طور پر کیا۔ فوجی عدالتوں کا قیام محدود وقت کیلئے کیا گیا ہے۔ ملک  حالت جنگ میں ہے۔ اس  اقدام کا مقصد دہشتگردی  اور انتہا پسندی کا جڑ سے خاتمہ ہے۔ مسلم لیگ ن آزاد عدلیہ  کا احترام کرتی ہے،  آئین میں ترمیم  کا کوئی اور مطلب نہیں لینا چاہئے مسلم لیگ ن کی حکومت عدلیہ  کے تمام فیصلوں کا پورے خلوص سے احترام  اور ان  پر عملدرآمد  کرتی ہے۔ عدلیہ  کی بحالی  کیلئے موثر  کردار ادا کیا۔ قبل  ازیں وزیراعظم  نواز شریف نجی دورے پر سعودی عرب پہنچ گئے۔ ریاض ائر پورٹ  پر وزیراعظم  کا خیرمقدم  گورنر ریاض پرنس  ترکی  بن  عبداللہ   بن عبدالعزیز نے کیا۔ وزیراعظم نے سعودی ولی عہد شہزادہ  سلمان بن عبدالعزیز سے ملاقات کی جس میں پاکستان اور سعودی عرب  کے درمیان مختلف  شعبوں میں تعاون  پر اتفاق کیا گیا۔ نواز شریف نائب ولی عہد شہزادہ  مقرن بن عبدالعزیز سے بھی ملاقات کریں گے۔  نواز شریف  آج عمرہ کی ادائیگی  کے علاوہ  مدینہ منورہ  میں روضہ رسولؐ  پر بھی حاضری دینگے۔ وزیر اعظم نے  خادم  حرمین شریفین شاہ عبداللہ  بن عبدالعزیز سے ملاقات میں ان کی خیریت دریافت کی۔ انہوں  نے شاہ عبداللہ  کی صحتیابی  اور درازی ی عمر کیلئے دعا کی۔ روانگی سے قبل وزیراعظم  نے میڈیا سے گفتگو میں  کہا پاکستان اور سعودی عرب  مشترکہ مذہبی  اقدار  کے رشتے میں جڑے ہوئے ہیں۔  علاوہ ازیں نواز شریف نے فرانسیسی جریدے میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کی شدید مذمت   کرتے   ہوئے کہا  ہے عالمی برادری اشتعال انگیز مواد کی اشاعت کی حوصلہ شکنی کرے ، آزادی اظہار کی آڑ میں مذہبی جذبات کو مجروح نہ کیا جائے۔ ایک  بیان  میں وزیراعظم نے  کہا ہے کہ توہین آمیز خاکوں کی ایک مرتبہ پھر اشاعت سے دنیا بھر کے اربوں مسلمانوں کی دل آزاری ہوئی ہے ۔شریف  پیلس  جدہ پہنچنے پر  مسلم لیگ ن  سعودی عرب  کے عہدیداروں  مرزا الطاف، محمد  نور الہی، سیٹھ عابد،  راجہ ظفر اقبال نے وزیراعظم  کا استقبال  کیا۔