کراچی میں ایک اور پولیس افسر کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا

خبریں ماخذ  |  خصوصی نامہ نگار
کراچی  میں ایک اور پولیس افسر کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا

گلستان جوہرکےعلاقے پہلوان گوٹھ میں نامعلوم افراد نے سرکاری گاڑی پرفائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایس پی اعجاز حیدرجاں بحق ہوگئے۔ فائرنگ کے بعد ملزمان فرار ہوگئے۔ اطلاع ملتےہی پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچی اورجائے وقوعہ کوگھیرے میں لےلیا۔
ایس ایس پی ایسٹ پیرمحمد شاہ کےمطابق حیدرآباد جیل کے سابق سپرنٹنڈنٹ اعجازحیدرشاہ اپنی اہلیہ کے ساتھ پہلوان گوٹھ سے خود گاڑی چلاتے ہوئے جارہے تھے جنہیں نامعلوم افراد نےنشانہ بنایا۔ انہیں سر،سینےاورپیٹ میں گولیاں ماری گئیں جس کےباعث وہ موقع پرجاں بحق ہوگئے جبکہ گاڑی میں سوار ان کی اہلیہ فائرنگ سے زخمی ہوئیں۔ کارمیں اعجازحیدرکی دوست شازیہ اورسحرش بھی موجود تھیں جومحفوظ رہیں جنہیں پولیس تفتیش کے لئے ساتھ لے گئی۔ پولیس نے نجی ہسپتال اور جائے وقوعہ سے دو مشکوک افراد کو بھی حراست میں لیا ہے۔ مقتول کا پوسٹ مارٹم جناح ہسپتال میں کیا گیا۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ کےمطابق اعجازحیدرکوسولہ گولیاں لگیں۔لاش کوپوسٹ مارٹم کےبعدان کے گھر منتقل کیا گیا۔ اس کے بعد ایس پی اعجاز حیدر کی نمازجنازہ مسلم آباد میں آئی جی جیل خانہ جات کے آفس کے باہرادا کی گئی۔نمازجنازہ میں محکمہ داخلہ سندھ کے افسران اورپولیس حکام نےشرکت کی۔