لاہور سمیت کئی شہروں میں بارش‘ چھت‘ بجلی گرنے سے ماں اور 2 بیٹیوں سمیت 5 جاں بحق

لاہور سمیت کئی شہروں میں بارش‘ چھت‘ بجلی گرنے سے ماں اور 2 بیٹیوں سمیت 5 جاں بحق

لاہور + شیخوپورہ  (سٹاف رپورٹر + سپورٹس رپورٹر + نیوز رپورٹر + خبرنگار + نمائندگان + نوائے وقت رپورٹ)  صوبائی دارالحکومت  سمیت کئی شہروں میں گزشتہ روز بارش ہوئی جس کے باعث نشیبی علاقے زیر آب آ گئے۔ لاہور کے نواحی علاقے مناواں میں مکان کی چھت گرنے سے ماں اور 2 بیٹیاں جاں بحق ہو گئیں جبکہ شیخوپورہ  میں آسمانی بجلی گرنے سے 2 افراد دم توڑ گئے۔  مناواں کے علاقہ شاہ دی کالونی میں محنت کش وسیم  محنت مزدوری کرنے گیا ہوا  تھا کہ اسی دوران اس کے گھر کی بوسیدہ چھت اچانک زور دار دھماکے سے گرگئی جس کے نتیجہ میں محنت کش وسیم کی 36 سالہ بیوی سنبل، 10 سالہ بیٹی افشاں،  2 سالہ بیٹی چاندنی ملبے تلے دبنے سے شدید زخمی ہو گئے اور موقع پر ہی دم توڑ گئے  جبکہ حادثے میں وسیم کا 20 سالہ بیٹا آفتاب زخمی ہوگیا۔ جب نعشیں گھر پہنچیں تو کہر ام مچ گیا۔ علاوہ ازیں  برکی کے علاقہ میں مکان کی بوسیدہ چھت گرنے سے  خاتون سمیت 3 افراد زخمی  ہو گئے۔  بارش کے باعث عالمگیر  کے گھر کی چھت اچانک  گر گئی جس سے گھر میں موجود عالمگیر اسکا بیٹا اور بیوی کنول ملبے تلے دب گئے امدادی ٹیموں نے  ملبے سے نکالا اور ہسپتال منتقل کیا۔ بارش کے باعث لاہور میں لیسکو کے 197  فیڈر ٹرپ کر گئے۔  علاوہ ازیں  لاہور سمیت پنجاب کے مختلف شہروں  میں گرج چمک کے ساتھ ہونے والی بارش سے گرمی کی شدت میں کمی واقع ہو گئی۔ محکمہ موسمیات کے مطابق موسم کا موجودہ سسٹم آج پنجاب سے نکل جائے گا۔ 24گھنٹوں کے دوران ملک کے بیشتر علاقوں  میں موسم خشک اور گرم رہے گا۔  علاوہ ازیں  تیز آندھی کے ساتھ شدید بارش اور ژالہ باری سے موسم انتہائی خوشگوار ہو گیا جبکہ شیخوپورہ کے موضع جھبراں کے قریب آسمانی بجلی گرنے سے  2محنت کش علی اور نواب دین دم توڑ گئے۔  بتایا جاتا ہے کہ نواب دین اپنی خچر گاڑی پر بیٹھ کر جھبراں لاٹووالہ روڈ پر آ رہا تھا کہ آسمانی بجلی گرنے سے نواب دین اور خچر دونوں ہلاک ہو گئے جبکہ قریبی کھیتوں میں ایک محنت کش علی اپنے جانوروں کے لئے چارہ لیکر جا رہا تھا کہ وہ بھی آسمانی بجلی کی زد میں آ گیا اور موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا جبکہ شدید بارش اور آندھی کے باعث شہر کی مختلف سڑکوں پر درخت اور ٹہنیاں گرنے سے متعددحادثات بھی رونما ہوئے جس سے12 افراد کے زخمی ہو گئے جن کو  ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال شیخوپورہ پہنچا دیا گیا ہے ۔ علاوہ ازیں بارش اور آندھی کے باعث شہر کے متعدد علاقوں میں بجلی کی تاریں گرنے کی بھی اطلاعات ملی ہیں۔ اٹھارہ ہزاری  سے نامہ نگار کے مطابق  دریائے جہلم میں طغیانی  سے تحصیل اٹھارہ ہزاری کے متعدد علاقے زیر آب آ گئے۔ مکینوں کو مشکلات کا سامنا ہے، دریائے جہلم میں آنیوالی  طغیانی سے حفاظتی  بند کے اندر  واقع نشیبی  علاقوں موضع  عمرانہ جنوبی 18  ہزاری لطیف گشاہ، کامرہ،  کوٹلہ نیک احمد، بیلہ چونتڑہ وغیرہ میں پانی داخل ہو گیا جس سے فصلوں کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے۔ علاوہ ازیں  خراب موسم کے باعث کئی پروازیں متاثر ہوئیں اور اسلام آباد کی دو پروازوں کو لاہور اور لاہور کی ایک پرواز کو ملتان ائر پورٹ  پر لینڈ کرنے پر مجبور کردیا۔ کوئٹہ سے آنیوالی شاہین ائر لائنز اور کراچی سے آنیوالی ائر بلیو ائر کی دو پروازوں کو اسلام آباد میں خراب  موسم کی وجہ سے لاہور ائر پورٹ  پر اتار لیا گیا جبکہ دبئی  سے لاہور آنیوالی پی آئی اے کی پرواز کو لاہور میں تیز ہوائوں، بارش اور گرج چمک کی وجہ سے ملتان بھیج دیا گیا۔  علاوہ ازیں لاہور سے کراچی بذریعہ سکھر جانیوالی  پرواز پی کے 565، 5 گھنٹوں کی تاخیر سے روانہ ہوئی۔ فیروزوالا  سے نامہ نگار کے مطابق بارش اور آندھی کے باعث  قلعہ ستار شاہ  اور کالا خطائی  روڈ پر درخت  گرنے سے ٹریفک جام ہو گیا جبکہ شاہدرہ  کے قریب گیس پائپ لائن میں اچانک آگ بھڑک اٹھی علاوہ ازیں  وزیراعلی شہباز شریف نے علاقے مناواں میں گھر کی چھت گرنے سے ماں اور 2 بیٹیوں کے جاں بحق ہونے پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے اور  واقعہ کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ جنڈیالہ شیر خان  سے نامہ نگار کے مطابق  موسلادھار بارش اور ژالہ باری سے نشیبی علاقے زیر آب آ گئے۔