فوجی عدالتوں کی کڑوی گولی کھانے کے باوجود حل نہیں ہوا‘ کراچی پولیس کو غیر سیاسی بنایا جائے: عمران خان

فوجی عدالتوں کی کڑوی گولی کھانے کے باوجود حل نہیں ہوا‘ کراچی پولیس کو غیر سیاسی بنایا جائے: عمران خان

اسلام آباد (آن لائن) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کراچی سانحہ کی مذمت کر تے ہو ئے کہا کہ پر امن لوگوں کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ خیبر پی کے میں این ٹی ایس کے بعد پولیس میں بھرتی کی جاتی ہے جبکہ سندھ میں پیسے لے کر پولیس کو بھرتی کیا جاتا ہے۔ محبوب انور کو جھوٹا کہنے پر کوئی شرمندگی نہیں اور نہ ہی معافی مانگوں گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جوڈیشل کمشن میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک میں غم کی لہر ہے، میں کراچی جا رہا ہوں۔ آج بھی آرمی پبلک سکول پشاور سانحہ کے بعد کی طرح کا ماحول ہے پوری قوم افسردہ ہے۔ ہم نے فوجی عدالتوں کی کڑوی گولیاں کھائیں لیکن پھر بھی مسئلہ حل نہیں ہو رہا جب تک پولیس غیر سیاسی نہیں ہو گی دہشت گردی کا مسئلہ حل نہیں ہو گا۔ رینجرز زیادہ دیر تک اس مسئلہ کو نہیں سنبھال سکتی۔ آج مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی ایم کیو ایم کو دہشت گرد جماعت کہتی ہیں، ایسا پہلے بھی ہوتا رہا لیکن ضرورت پڑنے پر اسی کا سہارا تلاش کیا جاتا رہا۔ انہوں نے کہا کہ جوڈیشل کمشن میں حقائق پر اوپن ٹرائل ہو رہا ہے مسلم  لیگ ن کو اس لئے تکلیف ہوئی کہ وہ پہلے کہتی رہی کہ پاکستان تحریک انصاف کے پاس کوئی ثبوت نہیں ہیں لیکن ہماری تیاری دیکھ کر مسلم  لیگ  ن کے غبارے سے ہوا نکل گئی۔