انتخابات میں فنگر پرنٹ کاغذ پر ہونے کی وجہ سے متنازعہ بنے: چیئرمین نادرا

انتخابات میں فنگر پرنٹ کاغذ پر ہونے کی وجہ سے متنازعہ بنے: چیئرمین نادرا

اسلام آباد (آن لائن+ نوائے وقت رپورٹ) چیئرمین نادرا عثمان مبین نے کہا ہے کہ  کاغذ پر فنگر پرنٹس کا نتیجہ 46 فیصد جبکہ الیکٹرانک مشین پر سو فیصد ہے اسی لئے انتخابات 2013 میں فنگر پرنٹس متنازعہ بنے، فنگر پرنٹ کاغذ پر ہونے کی وجہ سے میچ نہیں ہو رہے۔ پاکستان میں دو عدد شناختی کارڈ رکھنے والوں کی تعداد 1لاکھ 60 ہزار ہے، عام دفتری غلطیوں پر 40 ہزار افراد کو نادرا نے جرمانہ معاف کیا، 15لاکھ افغانیوں کی رجسٹریشن نادرا کے ذمہ ہے، امریکن ویزہ طرز پر آن لائن شناختی کارڈ  کیلئے درخواستوں کا اجراء پر جلد ہو گا، معذور افراد کو مستقل شناختی کارڈ بھی جاری کردئیے گئے ہیں ، 10لاکھ بلاک شناختی کارڈ کا مسئلہ حل کرلیا گیا ہے، باقی عمل بھی جلد مکمل ہو گا، سمارٹ کارڈ کا دائرہ ملک بھر میں پھیلانے پر فیس مز ید کم کی جائے گی۔ انہوں نے یہ بات قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ و نارکوٹکس کنٹرول کو بریفنگ میں بتائی۔ ایم این اے شائستہ پرویز ملک اور نعیمہ کشور خان نے  زیادتی کا شکار خواتین کا نام خفیہ رکھنے اور فلاح وبہود سے متعلق بل کمیٹی میں پیش کیا۔ وزارت داخلہ نے بل کی حمایت کی تاہم بل کے جائزہ کے لیے ایک ماہ کا وقت درکار ہونے پر کمیٹی کو آگاہ کیا گیا ہے۔ دیہی علاقوں میں شناختی کارڈ سے متعلق مسائل حل کرنے کے لیے بسیں چلانے پربھی اتفاق کیا گیا۔ اجلاس میں کرائم برانچ میں بھیجے جانے والے شناختی کارڈ کیسز پر ایجنٹ مافیا کی جانب سے 10ہزار روپے رشوت پر بھی بحث کی گئی۔ چیئرمین کمیٹی نے واقعہ پر ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے چیئرمین نادرا کو انکوائری کا حکم دیا۔ ایم کیو ایم کی جانب سے مشرف دور میں ایم این ایز کی جانب سے شناخت پرکارڈ جاری کرنے کی تجویز کو دوبارہ شروع کرنے کے بارے میں قائل کیا تاہم چیئرمین کمیٹی نے کہا ایم این ایز کی تصدیق پر شناختی کارڈ ڈیٹا مکمل کرکے جاری کیا جائے۔ نادرا حکام نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہنا تھاکہ ملک بھر میں نادرانے 101.5ملین شناختی کارڈ جاری کیے جن میں خواتین کو 44.1 ملین جبکہ مردوں کو 57.4ملین کارڈز جاری کیے نادراکے 563 سینٹرز جبکہ 234موبائل وینز،44 موٹر سائیکل شہریوں کو سہولت فراہم کرنے کے لیے کوشاں ہیں۔