کنٹینر سے گالیاں دینے والوں کو جواب نہیں دیا‘ تعمیری سیاست کرتے ہیں: نوازشریف

کنٹینر سے گالیاں دینے والوں کو جواب نہیں دیا‘ تعمیری سیاست کرتے ہیں: نوازشریف

اسلام آباد (نوائے وقت نیوز+ آن لائن) وزیراعظم نوازشریف کی زیرصدارت گلگت بلتستان کونسل کا اجلاس ہوا۔ گورنر گلگت بلتستان برجیس طاہر نے اجلاس کو ترقیاتی منصوبوں پر بریفنگ دی۔ وزیراعظم نے کہا کہ گلگت، بلتستان کو ملک کے دوسرے حصوں کے برابر لانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں۔ گلگت بلتستان کونسل نے 2014-15ء کے بجٹ کی منظوری دی۔ وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ تمام اخراجات شفاف انداز میں کئے جائیں۔ کرپشن کسی صورت برداشت نہیں کی جائیگی۔ اجلاس میں گلگت بلتستان تحفظ پاکستان بل 2015ء منظور کیا تھا۔ اجلاس میں وزیراعظم نوازشریف کو ٹمبر پالیسی سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی۔ وزیراعظم نے کہا کہ اقتصادی راہداری سے گلگت بلتستان کو بہت فائدہ ہوگا۔ کونسل نے گندم سبسڈی کیلئے 45 کروڑ کی خطیر رقم دینے پر تشکر کا اظہار کیا۔ بعدازاں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ نواز شریف کا دل گلگت بلتستان کے ساتھ دھڑکتا ہے۔ میں خود کونسل کے اجلاس میں شرکت کیلئے آیا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے نوجوانوں کا مستقبل میںسنواروں گا۔ گلگت بلتستان میں 280 طلبہ و طالبات کو لیپ ٹاپ دیئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کنٹینر والی سیاست کرنے نہیں آیا۔ کسی کو گالیاں دینے نہیں آیا۔ کبھی سنا نواز شریف نے گالی کا جواب دیا ہو۔ گالی تو دور کی بات کبھی انکی بات کا جواب نہیں دینا چاہتا کیونکہ اسکی باتیں اس قابل نہیں کہ جواب دیا جائے۔ میں تعمیری باتیں کرنے آیا ہوں۔ کبھی گالی نہیں دی نہ کنٹینر کی مہلت سیاست کی، صرف تعمیری بات کرتے ہیں۔ ہم زمینی فاصلوں کو کم کرنا چاہتے ہیں ہم نے خنجراب سے رائے کوشا تک سڑک بنا دی ہے یہاں پر بلتستان یونیورسٹی بھی بنائی جائے۔ بلتستان والے اتنے ہی محب وطن ہیں جتنا دوسرے لوگ ہیں۔ خنجراب سے لے کر رائے کوٹ تک بہترین سڑک بنا دی ہے اب تھاکوٹ سے اسلام آباد تک شاہراہ بنانے کا کام شروع کیا جائے گا۔ ہنزہ میں عطاء آباد جھیل ٹنل بنائی جا رہی ہے ٹنل پر 27 ارب روپے خرچ ہو رہے ہیں۔ ہم زمینی فاصلوں کے ساتھ دلوں کے فاصلے بھی کم کرنا چاہتے ہیں قراقرم یونیورسٹی موجود ہے بلتستان یونیورسٹی بنائی جائے گی۔ سکردو اور گلگت کے لئے پروازیں بڑھانے کا کہا ہے گلگت بلتستان کے لئے 40 ارب کیا 140 ارب روپے بھی کم ہیں۔ خنجراب سے اسلام آباد تک ریلوے سروس شروع کی جائے گی۔ آپ اتنے ہی محب وطن ہو جتنا اور محب وطن ہیں۔ پاکستان بھاشا ڈیم کا منصوبہ شروع کیا جائے گا جس میں 14 سو ارب روپے خرچ ہوں گے۔ دیا میربھاشا ڈیم 45 سو میگاواٹ بجلی فراہم کرے گا۔ آن لائن کے مطابق نواز شریف نے کہا کہ میں کنٹینر والی سیاست نہیں کروں گا، کسی کو  گالی  نہیں دوں گا، کنٹینر والوں کی سیاست میں غلیظ گالیاں لکھی ہوئی ہیں اور ہماری سیاست میں ’’خدمت‘‘ لکھی  ہے  جس کی وجہ سے عوام نے تیسری مرتبہ وزارت عظمی کے منصب پر فائز کیا ہے۔ گلگت  بلتستان کے نوجوانوں کو 20,20 لاکھ کے قرضے دیئے جائیں گے، علاقے کی ترقی کیلئے نئے یونیورسٹیاں،کالجز، ہسپتال، ریلوے ٹریک اور سڑکوں کا جال بچھائیں گے  جبکہ علاقے میں فضائی سروس میں اضافہ کیا جا رہا ہے، گلگت بلتستان میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے 40 ارب روپے کے منصوبے شروع  کر رہے ہیں۔ ہمارے پاس وقت تھوڑا ہے اور ترقیاتی منصوبے زیادہ ہیں، اپنے دور حکومت میں تمام مسائل کو حل کریں گے۔ وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ میں کنٹینر والی سیاست نہیں کروں گا، کسی کو یہاں گالی نکالنے نہیں آیا ہوں، کنٹینر پر کھڑے ہو کر مجھے جتنی گالیاں دی گئیں میں نے گالی تو دور کی بات جواب دینا بھی گوارا  نہیں کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کنٹینر والوں کی سیاست کی بنیاد گالیوں پر ہے۔ ایسی سیاست نہیں کی جو رات کو کچھ اور دن کو کچھ کہتے ہیں۔ وزیراعظم نے  کہا کہ جو بھی کہتا ہوں اسے پورا کر کے دکھاتا ہوں، گلگت بلتستان میں نئے  یونیورسٹیاں ،سڑکیں، ہسپتال اور کالجز بنائیں گے، ہماری تمام تر توجہ علاقے کی محرومیوں کو ختم کرنا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ علاقے کی ترقی کیلئے40 ارب روپے کے منصوبے شروع کر رہے ہیں، علاقے کی ترقی کیلئے 40 کی بجائے 140 ارب بھی کم ہیں۔ اس موقع پر وزیراعظم نواز شریف نے دیامر بھاشا ڈیم منصوبے پر بھی کام شروع کرنے کا اعلان کیا۔