سری نگر پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونج اٹھا

خبریں ماخذ  |  خصوصی نامہ نگار
سری نگر پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونج  اٹھا

حریت رہنما سید علی شاہ گیلانی کے استقبال کیلئے سری نگر میں نکالی گئی ریلی ، پاکستان کے ساتھ محبت کے نعروں سے گونج اٹھی،رہنماوں اور نوجوانوں نے پاکستانی پرچم بھی لہرا ڈالے-حریت رہنما مسرت عالم نے بھی پاکستان کے حق میں اور بھارت کے خلاف خوب نعرے بلند کیے-
ریلی میں ہزاروں کی تعداد میں کشمیریوں نے شرکت کی، ہر کسی کی زبان پر جیوے جیوے پاکستان اور میری جان پاکستان کے نعرے تھے ،جہاں پاکستان زندہ باد کے نعرے گونجتے رہے وہیں پاکستان کا سبز ہلالی پرچم بھی جوش وخروش سے لہراتا رہا-
ریلی سے خطاب کرتے ہوئے حریت رہنما سید علی گیلانی کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر پاک بھارت تنازع نہیں سہ فریقی مسئلہ  ہے، بھارت نے جموں و کشمیر پر غاصبانہ قبضہ کررکھا ہے، مفتی سعید اعلان کریں کہ کشمیربھارت کا اٹوٹ انگ نہیں،کشمیرعالمی سطح پرتسلیم شدہ متنازع مسئلہ ہے-
سری نگر کی فضا پاکستانی نعروں سے گونجی تو بھارتی میڈیا بھی تلملا اٹھا ، اور اپنے مکرو چہرہ ایک بار پھر سامنے لے آیا ، خوب شور بھی مچایا ، کشمیریوں کی پاکستان سے والہانہ محبت پر ان سے برداشت نہ ہوسکی ،اور زہر اگل کر خوب منفی پروپیگنڈا کرتا رہا-
بھارتی مظالم اور مودی سرکار کی متعصبانہ پالیسیاں بھی ایک بار پھر بےنقاب ہو گئیں،بھارتیہ جنتا پارٹی کی ترجمان نارشما راو نے سوشل میڈیا پر اپنے پیغام میں کہا کہ پاکستانی پرچم اور نعرے قابل قبول نہیں،مفتی سعید فوری طور پر نوٹس لے کر معاملے کی انکوائری کروائیں، اور سزائیں بھی دلوائیں
پچھلے ماہ مارچ میں بھی کشمیری حریت رہنما آسیہ اندرابی نے بھی یوم پاکستان کی تقریب میں سبز ہلالی پرچم بلند کیا تھا ، خواتین کی اس تقریب میں پاکستان کے حق میں شدید نعرے بازی بھی کی گئی تھی،باہمت اور بہادر خاتون نے پاکستان کا قومی ترانہ بھی پڑھا تھا،  اس وقت بھی جمہوریت کی جھوٹی علمبردار بھارتی حکومت کا گھناونہ چہرہ کھل کر سامنے آیا تھا، اور آسیہ اندرابی کیخلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ، سری نگر میں نکالی جانے والی ریلی نے بھی بھارتی میڈیا اور انتہاء پسندوں ہندووں  کے سینوں میں ایک بار پھرشعلے بھڑکا دیئے ہیں-