ڈرون حملے جاری رکھنے کا امریکی اعلان حکومت، پارلیمنٹ کے منہ پر طمانچہ ہے: منور حسن

لاہور (اپنے نمائندے سے) امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی میں پارلیمنٹ کی سلامتی کمیٹی کی سفارشات کی متفقہ منظوری کی بازگشت ابھی سنائی دے رہی تھی کہ امریکہ نے ڈرون حملے جاری رکھنے کا اعلان کر کے حکومت اور پارلیمنٹ کے منہ پر طمانچہ مارا ہے اور امریکی ڈالروں پر پلنے والے حکمرانوں کی اوقات یاد دلائی ہے۔ حکومت اپنی پہلی قراردادوں پر عمل کرتی تو آج انہیں یہ ہزیمت اور شرمندگی نہ اٹھانا پڑتی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں جاری مرکزی تربیت گاہ کے سینکڑوں شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ منور حسن نے کہا کہ عوام نے تین تین چار چار بار پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ کو اقتدار دے کر آزما لیا ہے۔ ان پارٹیوں نے عوام کو غربت، مہنگائی، بدامنی، لاقانونیت اور بے روزگاری کے سوا کچھ نہیں دیا بلکہ لاقانونیت سے بچنے کےلئے گیلانی اور مہنگائی سے نجات کےلئے زرداری سے بچنا ضروری ہے۔ گیلانی لاقانونیت اور زرداری مہنگائی کا سمبل بن چکے ہیں۔ امریکہ اسلام کا نام و نشان مٹانے اور عالم اسلام کے وسائل پر قبضہ کر کے مسلمانوں سے زندگی کی سہولتیں چھین لینا چاہتا ہے۔ سیاچن میں برفانی تودے کے نیچے دب جانے والے قوم کے سپوت اپنے وطن کے دفاع کےلئے ناقابل برداشت سردی کو برداشت کرتے رہے جن کی سلامتی کےلئے پوری قوم دعا گو ہے۔ دیگر مقررین عارف علوی، سجاد میر، فرح سہیل، عبدالغفار عزیز اور ڈاکٹر حفیظ الرحمن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایران اگر چاہے تو تنہا بھی شام کے حالات بہتر بنا سکتا ہے۔ ایران کو شام میں قتل عام رکوانے کےلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہئے۔ پاکستان کے عوام اپنے شامی بھائیوں کے ساتھ ہیں۔