بھوربن کانفرنس میں او آئی سی کانفرنس:اسلامی ممالک کے درمیان تجارت‘ سرمایہ کاری بڑھانے ‘ ٹیرف و نان ٹیرف بیریئر کے خاتمہ پر اتفاق

مری ( احسن صدیق) اسلامی ممالک کی تنظیم او آئی سی کے رکن ممالک کے سفیروں نے بھوربن پی سی ہوٹل میں لاہور چیمبر کے زیراہتمام ہونے والی او آئی سی کانفرنس میں اسلامی ممالک کے درمیان باہمی تجارت اور سرمایہ کاری کو فروغ دینے، ٹیرف اور نان ٹیرف بیریئر کے خاتمے، علاقائی تجارت بڑھانے اور ویزا پالیسی آسان بنانے پر اتفاق کیا گیا۔ کانفرنس کی صدارت سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے کی۔ کانفرنس میں اسلامی ممالک کے 33سفیروں نے شرکت کی۔ کانفرنس میں خطبہ استقبالیہ لاہور چیمبر کے صدر عرفان قیصر شیخ نے پیش کیا۔ کانفرنس میں لاہور چیمبر کے سا بق سینئر نائب صدر شیخ محمد ارشد، سہیل لاشاری، یعقوب طاہر اظہار اور ایگزیکٹو کمیٹی کے ارکان سمیت صنعت کاروں اور تاجروں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے کہا کہ اس وقت پوری دنیا کو غربت، بے روزگاری اور دہشت گردی کے چیلنجز کا سامنا ہے جس کا شکار اسلامی ممالک سمیت پاکستان بھی ہے۔ پاکستان کو دہشت گردی کی جنگ کے باعث ستر ارب ڈالر سے زائد کا نقصان پہنچا۔ تیس ہزار سویلین اور نو ہزار سے زائد ہمارے فوجی جوان اور افسران نے شہادت کا درجہ حاصل کیا ۔سیلابوں کے باعث ہماری معیشت بری طرح متاثر ہوئی لیکن ہماری قوم کے جذبے میں کوئی کمی نہیں ہوئی بلکہ ان حالات میں بھی ہمارے صنعت کاروں اور تاجروں کی وجہ سے برآمدات میں اضافہ ہوا۔ زرمبادلہ کے ذخائر بڑھے اور ملکی معیشت میں بہتری آئی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اسلامی ممالک کی تنظیم او آئی سی کو فعال اور متحرک بنانا ہے۔ علاقائی تجارت کو فروغ دینا ہے اور نجی شعبے کے کردار کو اجاگر کرنا ہے کیونکہ نجی شعبے کے باعث تجارت اور سرمایہ کاری کو بڑھایا جا سکتا ہے ۔ انہوں نے او آئی سی کے سفیروں پر زور دیا کہ پاکستان میں توانائی، ٹیکسٹائل، ڈیری ڈویلپمنٹ اینڈ لائیو سٹاک سمیت دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری اور مشترکہ منصوبے لگانے کے وسیع مواقع موجود ہیں ۔اس موقع پر اسلامی ممالک کے سفیروں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت پوری دنیا کو مختلف چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کیلئے اسلامی ممالک کو مشترکہ حکمت عملی اپنانا ہو گی۔ سفیروں نے لاہور چیمبر کو کامیاب او آئی سی کانفرنس منعقد کرانے پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ اس قسم کی کانفرنسوں کا انعقاد ضروری ہے۔ کانفرنس کے دوران مختلف سفیروں کی جانب سے اسلامی ممالک کی مشترکہ تجارتی منڈی اور مشترکہ کرنسی کا قیام اور آزادانہ ویزا پالیسی بنانے کی تجاویز بھی دی گئیں۔ قبل ازیں لاہور چیمبر کے صدر عرفان قیصر شیخ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ او آئی سی کے رکن ممالک کے مابین تجارتی و معاشی تعاون کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے او آئی سی کی مشترکہ تجارتی منڈی کے قیام کی ضرورت پر زور دیا۔ کانفرنس کے اختتام پر سفیروں کو لاہور چیمبر کی جانب سے یادگاری شیلڈیں بھی دی گئیں۔