بلوچستان میں امن کےلئے حکومت مشرف کے ریڈ وارنٹ جاری کرے: لارڈ نذیر

اسلام آباد (لیڈی رپورٹر + آئی این پی) برطانوی پارلیمنٹ کے رکن لارڈ نذیر احمد نے کہا ہے کہ امریکہ کی جانب سے حافظ سعید کے سر پر دس ملین ڈالر کا انعام رکھنا ناانصافی ہے۔ پاکستانی حکومت اپنی داخلی سلامتی و خودمختاری کے برعکس فیصلے نہ کرے اور مضبوط پالیسیاں بنائے۔ نیشنل پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستانی شہریت کے حامل لارڈ نذیر احمد نے کہا کہ کشمیر پر موجودہ حکومت کی پالیسی مشرف کی پالیسی تھی۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے لاپتہ افراد کو جلدازجلد بازیاب کروایا جائے۔ حکومت بلوچستان کے عوام کے احساس محرومی کو دور کرنے کےلئے کسی قسم کی کوتاہی نہ برتے۔ لارڈ نذیر نے مزید کہا کہ صدر زرداری نے مجھے آزاد کشمیر کی اسمبلی میں صرف رحمن ملک کو خوش کرنے کی خاطر نہیں آنے دیا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت مشرف کے ریڈ وارنٹ جاری کرے اور اسے عدالتوں میں لے کر آئے۔ تاکہ بلوچستان میں قیام امن میں مدد مل سکے۔ آئی این پی کے مطابق رکن لارڈ نذیر احمد نے کہا ہے کہ صدر زرداری اور پی پی پی کی حکومت آزاد کشمیر کا تشخص ختم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں اگر یہ سلسلہ جاری رہا تو کشمیری بھی بلوچوں کی طرح پہاڑیوں پر چڑھ سکتے ہیں۔ صدر زرداری کو دورہ بھارت سے پہلے اور بعد میں کشمیری قیادت کو اعتماد میں لینا چاہئے تھا، ایم کیو ایم کراچی میں امن کی بات کرے تو ساتھ دینے کےلئے تیار ہوں، آزاد خارجہ پالیسی کی تشکیل کےلئے پارلیمانی سفارشات مثبت اقدام ہے۔ قیام امن کےلئے طالبان کے ساتھ بات چیت کےلئے تیار ہوں۔