کوئٹہ پولیس نے خروٹ آباد واقعے کی فوٹیج بنانے والے صحافی جمال ترکئی کو ایک گھنٹے حراست میں رکھنے کے بعد رہا کردیا ۔

کوئٹہ پولیس نے خروٹ آباد واقعے کی فوٹیج بنانے والے صحافی جمال ترکئی کو ایک گھنٹے حراست میں رکھنے کے بعد رہا کردیا ۔

کوئٹہ پولیس نے صحافی جمال ترکئی کو آج صبح حراست میں لے کر خروٹ آباد تھانے میں لے گئی جہاں ایک گھنٹہ بعد انہیں رہا کردیا گیا۔ صحافی جمال ترکئی کا کہنا ہے کہ پولیس نے انہیں ڈبل سواری کے الزام میں گرفتار کیا اور تھانے لا کر بدکلامی کی اور تشدد کا نشانہ بنایا۔ جمال ترکئی نے خروٹ آباد تحقیقاتی ٹریبونل کے سامنے چشم دید گواہ کی حیثیت سے بیان دیا تھا اور واقعے کی فوٹیجز بھی عدالت کے سامنے پیش کی تھیں۔ جسٹس محمد ہاشم کی سربراہی میں بننے والے خروٹ آباد تحقیقاتی ٹریبونل نے گواہان کو سخت سیکیورٹی فراہم کرنے کی ہدایت کررکھی ہے۔