غدار القاعدہ کیساتھ ملے ہوئے ہیں‘مل کر مقابلہ کرنا ہوگا: وزیر داخلہ

لاہور / اسلام آباد (وقت نیوز / وقائع نگار / اے پی پی) وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک نے کالعدم تحریک طالبان پاکستان کو کافر قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ ملک و قوم کے ان دشمنوں کا اسلام اور پاکستان سے کوئی تعلق نہیں۔ دہشتگرد چند ٹکوں کی خاطر غیر ملکی آقاﺅں کو خوش کرنا چاہتے ہیں۔ القاعدہ نے پاکستان کو دشمن نمبر 1 بنا لیا اور ہمارے ملک کے غدار ان کیساتھ ملے ہوئے ہیں‘ پوری قوم کو حکومت کیساتھ مل کر ان غداروں کا مقابلہ کرنا ہو گا‘ اسلام آباد میں خودکش دھماکہ کے بعد وقت نیوز سے خصوصی گفتگو میں رحمان ملک نے کہا کہ خودکش حملہ آور جیکٹ پہن کر کسی بھی راستے آ سکتا ہے‘ اسلام آباد جیسے بڑے شہروں میں ہزاروں لوگ گھومتے پھرتے ہیں‘ ہر آدمی کو چیک کرنا ممکن نہیں ہے۔ اسلام آباد پولیس کو ایک ہفتہ سے الرٹ دے رہے تھے۔ کراچی سے متعلق سوال پر وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ کراچی میں ہر واقعہ کو ٹارگٹ کلنگ یا سیاسی جنگ نہیں کہہ سکتے وہاں مختلف مافیاز کی آپس میں لڑائیاں بھی چل رہی ہیں تاہم ٹارگٹ کلنگ کو ہم نے کم کرا دیا ہے۔ وقائع نگار کے مطابق سینٹ اجلاس میں اظہار خیال اور بعدازاں میڈیا سے بات چیت میں رحمان ملک نے کہا کہ شمالی وزیرستان میں آپریشن کیلئے دباﺅ نہیں ہے‘ آپریشن کا فیصلہ ملکی مفاد کے مطابق کرینگے۔ کراچی میں رینجرز کے ہاتھوں نوجوان کی ہلاکت کی رپورٹ عدالت میں پیش کر دی ہے۔ اسامہ کی موت کے بعد القاعدہ نے پاکستان کو اپنا ہدف بنا لیا ہے میری درخواست ہے کہ اس معاملے پر ان کیمرہ اجلاس طلب کیا جائے۔ علاوہ ازیں وزیر داخلہ سے سینٹ میں قائد حزب اختلاف اور جمعیت علماءاسلام (ف) کے رہنما مولانا عبدالغفور حیدری نے ملاقات کی اس دوران قلات میں پاسپورٹ آفس کے قیام‘ لوڈشیڈنگ کے خاتمے سمیت دیگر امور زیر بحث آئے۔ اس موقع پر انہوں نے قلات میں پاسپورٹ آفس کے قیام کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان کی تعمیر و ترقی کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائینگے۔
وفاقی وزیر داخلہ