لاہور ہائیکورٹ نے عدالتی احکامات کی خلاف ورزی پر پی ٹی سی ایل کے جنرل مینجر کو توہین عدالت کے نوٹس جاری کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ بابو طبقہ عدالتی احکامات پر عمل کرنا اپنی توہین سمجھتا ہے

لاہور ہائیکورٹ نے عدالتی احکامات کی خلاف ورزی پر پی ٹی سی ایل کے جنرل مینجر کو توہین عدالت کے نوٹس جاری کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ بابو طبقہ عدالتی احکامات پر عمل کرنا اپنی توہین سمجھتا ہے

لاہورہائیکورٹ کے جسٹس خالد محمود خان نے کیس کی سماعت کی۔ درخواست گزار اصغر علی کے وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ پی ٹی سی ایل انتظامیہ عدالتی احکامات کے باوجود گذشتہ تین سال کے واجبات ادا نہیں کر رہی۔ پی ٹی سی ایل کے وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ عدالتی حکم پی ٹی سی  ایل قوانین کے مطابق نہیں ہے۔ عدالت نے سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ بابو طبقہ عدالتی احکامات پر عمل کرنا اپنی توہین سمجھتا ہے، عدالتیں قانون کے دائرے میں رہ کر کام کرتی ہیں۔ کسی فرد یا ادارے کی خواہشات کے مطابق کام نہیں کرتیں۔ عدالت نے پی ٹی سی ایل کے جی ایم کو توہین عدالت کے نوٹس جاری کرتے ہوئے پندرہ جنوری کو جواب سمیت ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا۔