مسلم لیگ نون نے ملک کو کنگال کیا‘ معاشی ایمرجنسی لگائی جائے‘ کپتان اپنی دنیا میں مست ہیں : زرداری

مسلم لیگ نون نے ملک کو کنگال کیا‘ معاشی ایمرجنسی لگائی جائے‘ کپتان اپنی دنیا میں مست ہیں : زرداری

پشاور (نوائے وقت رپورٹ) سابق صدر آصف زرداری نے پشاور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پرویز خٹک کے گاﺅں گیا تھا وہاں بھی مجھے نیا پاکستان نہیں ملا، صرف کچرا نظر آیا، جب بھی مسلم لیگ ن کو حکومت ملی اس نے ہمیشہ ملک کو کنگال کیا جب کہ پیپلز پارٹی کی حکومت نے ہمیشہ پاکستان کا خزانہ بھرا۔ کپتان صاحب اپنی دنیا میں مست ہیں، ان کی نظر میں سب سے اچھا بندہ پرویز خٹک ہے۔ پیپلز پارٹی جب بھی اقتدار میں آئی لوگوں کو ملازمتیں دیں، چھینی نہیں۔ سندھ اب تک 150 میگاواٹ بجلی دے چکا ہے، خیبر پی کے نے ایک میگاواٹ بھی نہیں دی۔ لاہور کے حلقے این اے 120 میں ضمنی الیکشن ہوئے تو لوگوں کو روزگار ملا۔ پچھلے چار سال میں نواز شریف نے کچھ نہیں کیا تھا۔ ضمنی انتخاب میں میاں صاحب کے حلقے میں مریم نواز گئیں تو راتوں رات کام ہونے لگے۔ پیپلزپارٹی جب بھی حکومت میں آئی ایکسپورٹ اور فنانس بڑھی، دوبارہ حکومت کا موقع ملا تو لوگوں کو نوکریاں دیں گے۔ ملک میں معاشی ایمرجنسی لگائی جائے۔ پارلیمنٹ کو اپنے مسائل کے حل خود نکالنے چاہئیں۔ ہمارے دور میں ایک جج صاحب ٹکر میں تھے، گیلانی کو گھر بھیج دیا تھا، اقتدار کی منتقلی آرام سے ہو گئی۔ نواز شریف کہتے ہیں مجھے کیوں نکالا۔ میاں صاحب! آپ کو شک ہے اور آپ بے قصور تھے تو نکلے کیوں۔ کالعدم تنظیمیں کیسے جمہوری ہو سکتی ہیں۔ مذہبی جماعتیں تو پہلے ہی سیاست میں ہیں۔ فاٹا کو خیبرپی کے میں ضم کریں گے۔ ہمارے وزیراعظم کو گھر بھیجا گیا تو ہم نے کوئی جلوس نہیں نکالا۔ این اے 4 کے الیکشن میں سب کچھ واضح ہو جائے گا۔ پاکستان کی سٹرٹیجک لوکیشن ہی ایسی ہے خطرات رہتے ہیں۔ ہمارے دور میں دنیا میں معاشی بحران تھا، اب ایسا نہیں۔ مسلم لیگ ن نے قرضہ بہت بڑھایا ہے جسے اتارنا بھی ہے۔ فاٹا کے معاملے پر سب سے پہلے بے نظیر بھٹو سپریم کورٹ گئی تھیں، بے نظیر بھٹو نے کہا کہ فاٹا کو قومی دھارے میں لایا جائے۔ خطرات سے گھبرانا نہیں بلکہ نمٹنے کی حکمت عملی بنانی چاہئے۔ حکومت میں آ کر خیبرپی کے کو سپیشل پیکیج دیں گے۔ علاوہ ازیںپاکستان پیپلز پارٹی حکومت سے ملک میں معاشی ایمرجنسی نافذ کے نفاذ کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ غیر ملکی زرمبادلہ انتہائی کم سطح پر پہنچ گئے ہیں، پاکستان معاشی طور پر غیر مستحکم ہو چکا ہے، معاشی گراوٹ سے بچا نہیں جا سکتا ہے،وزیر خزانہ فوری طور پر اپنے عہدے سے مستعفی ہوں، وزیرخزانہ کی جگہ امریکہ میں ہونے والی کانفرنس میں وزیر داخلہ شریک ہوئے ہیں، عالمی ادارے کبھی بھی ایسے شخص سے گفتگو نہیں کریں گے۔ پیپلز پارٹی کے رہنماﺅں سلیم مانڈوی والا، نیئر حسین بخاری، فرحت اللہ بابر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ کہتے ہیں کہ معاشی حالات اس لئے خراب ہیں کہ ہمیں نکالا گیا ہے، ہمارے سامنے ایف بی آر کے ریکارڈ میںٹمپرنگ کی گئی اس کا جب تک فرانزک آڈٹ نہیں ہو گا کچھ بھی پتہ نہیں چلے گا۔
پیپلزپارٹی مطالبہ